حسن اور سیاست

Poet: اخلاق احمد خان
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

ہمشیرہِ قابیل ہو یا مجنوں کی لہیلیٰ ہو
یہ زلفِ نازک کا جھگڑا پرانا ہے

دخترِ یہود پہ دل ہارا فلسطیں دے ڈالا
یہ گوری چمڑی کا پھندا پرانا ہے

ملکہ جودا بائی تھی دینِ اکبر کی پزیرائی تھی
تختِ ہند میں مکروفریب کا چرچا پرانا ہے

وہاں بنگال جلتا تھا ، یہاں حسن راج کرتا تھا
یہ شباب و سیاست کا رشتہ پرانا ہے

سابقہ اہلیہ کپتان ہو یا زوجہِ مشرف ہو
کفر کا بیٹیاں پیش کرنے کا حربہ پرانا ہے

حساس اداروں میں بیٹھے اہم منصبوں پر پہنچے
نعروں سے حل نہ ہوگا قادیانی مسلہ پرانا ہے

Rate it:
30 Oct, 2018

More Political Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 83 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City