کچھ تو محبتوں کو سیاست سے دور رکھ

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

کچھ تو محبتوں کو سیاست سے دور رکھ
شاداب بارشوں میں وضاحت سے دور رکھ

دنیا ہے مال و زر کی محبت میں مبتلا
برعکس اس کے پیار کی حاجت سے دور رکھ

بے وجہ ساری رات وہ سڑکوں پہ گھومنا
اک دور تھا عجیب سی وحشت سے دور رکھ

آتا ہے یاد آج بھی شدت سے رات بھر
کب اس کو بھول جائے عبادت سے دور رکھ

فکر معاش فن کو مرے چاٹتی رہی
روٹی کی عمر بھر تو ضرورت سے دور رکھ

میرے خلوص کا کبھی تجھ سے ملے صلہ
ناداں ہوں آج تک یہی حسرت سے دور رکھ

رشتوں کو ٹوٹنے سے بچاتی رہی سدا
اس بات کوہمیشہ سیاست سے دور رکھ

شاید کہ روز حشر مرا کم حساب ہو
انساں سے پیار وشمہ شرارت سے دور رکھ

Rate it:
01 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Aslam o alekum bohat khob nice vshma

By: Sadaqat ali, Lahore on Nov, 03 2018

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City