میں زندگی کے بڑے امتحاں بناتے ہیں

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

ترا یقین ہوں کب سے جہاں بناتے ہیں
میں زندگی کے بڑے امتحاں بناتے ہیں

شجر شجر مری آمد کا منتظر موسم
میں برگ ہواؤں میں اڑاں بناتے ہیں

یہ دور علم و ہنر اس کو پڑھ نہیں پایا
صحیفہ دل کس کی یہ زباں بناتے ہیں

عجیب لطف ہے اس ٹوٹنے بکھرنے میں
ہم ایک مشت غبار اب کہاں بناتے ہیں

جو خاک ہو گئے تیرے فراق میں ان کا
خیال بھی کبھی اے جان جاں بناتے ہیں

جو مصلحت کے تقاضے کے تحت لکھے گئے
سو مستقل یہ فسانے نشاں بناتے ہیں

رہے قریب ، مرے رازداں نہ بن وشمہ
تھی دوستی تو بہت مہرباں بناتے ہیں

 

Rate it:
04 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City