ڈر

Poet: م الف ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

عشق کا تھا شوق پر تاثیر سے ڈرتے رہے
رانجھے تھے جتنے یہاں وہ ہیر سے ڈرتے رہے

شعر کہنے کے سوا ہم کو نہ آیا اور کچھ
پھر بھی اپنی شوخی ء تحریر سے ڈرتے رہے

جس کو بھی پلائیں گے وہ زہر ہی تو اگلے گا
اپنے امرت ہی کی ہم تاثیر سے ڈرتے رہے

نام سے اپنے کہیں بدنام ہو جائے نہ وہ
سوچ کر بس عشق کی تشویر سے ڈرتے رہے

ایک خدائے لم یزل غلطی ہوئی ہے ہم سے یہ
کرتے ہیں وعظ اور خود تطہیر سے ڈرتے رہے
 

Rate it:
06 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Arshad Qureshi
My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More
Visit 167 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City