آج اس نے میری تصویر پرانی مانگی

Poet: عبیداللہ لطیف
By: Ubaidullah Latif, Faisalabad

آج اس نے میری تصویر پرانی مانگی
ہائے کمبخت نے کس وقت جوانی مانگی
حقیقت تو یہ ہے کہ اس نے مجھ سے شیطانی مانگی
جب ہوا میں باشعور تو مانگنے والے نےنادانی مانگی
لیکن ہم نے آپ سے صرف اپنے آقاﷺکی محبت کی ترجمانی مانگی
نہ ٹرخانا محض باتوں میں میرے دوست مجھے
ہمیں طلب نہیں کسی اور چیز کی ہم نے تو فقط لوح قرآنی مانگی
بس کر لو اک عہد اپنے رب سے آج دینے سے نہیں کریں گے انکار
جب بھی حب رسولﷺ میں اسلام کے لیے کسی نےکوئی قربانی مانگی
کہتا ہوں اپنے پروردگار سے کیوں ڈالتے ہیں آپ مجھے آزمائشوں میں
میں نے اور تو کچھ مانگا نہیں صرف اک دولت ایمانی مانگی
ملا جواب عبید کو رب ذوالجلال سے تم نے صرف دولت ایمانی ہی نہیں مانگی
بلکہ مانگ کر دولت ایمانی تونے حوض کوثر پر میرے حبیب ﷺکی میزبانی مانگی

Rate it:
22 Nov, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: عبیداللہ لطیف Ubaidullah Latif
Visit 3 Other Poetries by عبیداللہ لطیف Ubaidullah Latif »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City