انسان

Poet: م الف ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

دنیا کے حوادث سے پریشان ہے انساں
ہر چال سے لوگوں کی یہ انجان ہے انساں

یہ عشق کے دستور سمجھتا ہے تبھی تو
کرتا یہ محبت پہ جاں قربان ہے انساں

دیکھی نہیں جاتی ہے یہ لوگوں کی تباہی
خود روپ میں انسان کے شیطان ہے انساں

اشرف ہے بنایا جہاں میں جس کو خدا نے
اپنی ہی تباہی کا بھی سامان ہے انساں

یہ بھول چکا اپنے ہی بننے کے مراحل
اس دور میں بھی کتنا یہ نادان ہے انساں

ابلیس کی چالوں کو سمجھ جاتا ہے جو بھی
دنیا کی حقیقت سے پریشان ہے انساں

ارشیؔ چلو اپنا یہاں مشکل ہے گذارا
انسان کے کردار پہ حیران ہے انساں
 

Rate it:
02 Dec, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Arshad Qureshi
My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More
Visit 180 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City