شکوہ کبھی زبان پہ لایا نہیں گیا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

شکوہ کبھی زبان پہ لایا نہیں گیا
وہ بات یونہی اپنی سنایا نہیں گیا

خوشیوں کی اک جھلک ہی دکھانے سے پیشتر
مجھ کو مرے نصیب بنایا نہیں گیا

خلقِ خدا کو سینے سے اک بار تو لگا
اخلاص سے ہی بخت جگایا نہیں گیا

پتھر نہیں یہ پیار کا گوہر ہے ہاتھ میں
ہونٹوں سے جس کو وہ بھی لگایا نہیں گیا

ماتم کدہ ہیں اپنی انا کے غرور میں
سورج کو جو چراغ دکھایا نہیں گیا

اشکوں سے تر وفا ؤں کی خالی زمین پر
آنکھوں میں خواب وشمہ جی آیا نہیں گیا

Rate it:
14 Dec, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City