چاہتی ہو کہ دل میرے میں نہ کوئی ایسی ہلچل ہو

Poet: ڈاکٹر عمار یونس
By: Ammar Younas, Beijing China

چاہتی ہو کہ دل میرے میں نہ کوئی ایسی ہلچل ہو
خود ہی پاگل کرتی ہو پھر کہتی ہو "تم پاگل ہو"

سانسیں رک سی جاتی ہیں جب آنکھ تری میں کاجل ہو
میں ان میں دھنستا جاتا ہوں، گہری جیسے دلدل ہو

دل میرا ہے بچہ سا اور جلدی سے سو جاتا ہے
ترے کنگن کی جب کھن کھن ہو اور زلف کا کالا آنچل ہو

تخیل کی بنجر دھرتی پر شعروں کی کلیاں کھلتی ہیں
غزلوں کی بارش ہوتی ہے جب یاد تری کا بادل ہو

چاند کی چنچل کرنیں جب ترے کومل گالوں پہ پڑتی ہیں
شور سا اک مچ جاتا ہےجیسے رقص میں سارا جنگل ہو

میں اسکی باتیں سنتا رہوں وہ اپنی باتیں کرتی رہے
مری اتنی سی بس خواہش ہے، یہ سلسلہ اب مسلسل ہو

Rate it:
03 Jan, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Ammar Younas
Visit Other Poetries by Ammar Younas »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City