کوئی روشنی میرا خواب کر
Poet: Asim Saqlain Durani
By: Shehzad Raja, Lahore

تو جو کب سے دل میں ہے جا گزیں میری دھڑکنوں کا حساب کر
تو جو کب سے بیٹھا ہے آنکھ میں کوئی روشنی میرا خواب کر

میں جو سر بہ سر کسی گم شدہ سی صدا کا عذاب ہوں
میری تار زخم تلاش لے، مجھے شام غم کا رباب کر

بڑی بے امان ہے زندگی، اسے بن کے کوئی پناہ مل
کوئی چاند رکھ میری شام پر، میری شب کو مہکا گلاب کر

کوئی بد گمان سا وقت ہے کوئی بد مزاج سی دھوپ ہے
کسی سایہ دار سے لفظ کو میرے جلتے دل کا حجاب کر

کبھی دیکھ لے میری چاہ کو کبھی آ نکل میری راہ کو
کہیں دو قدم میرے ساتھ چل کے مجھے بھی عالی جناب کر

تو جو کب سے دل میں ہے جا گزیں میری دھڑکنوں کا حساب کر
تو جو کب سے بیٹھا ہے آنکھ میں کوئی روشنی میرا خواب کر

Rate it: Views: 124 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 23 Feb, 2009
About the Author: Shehzad Aslam Raja

I am Markazi General Secratary of AQWFP (AL-QALAM WRITERS FOURM PAKISTAN) and Former President of Bazm-e-Adab Govr Sadique Abbas Digree college Dera N.. View More

Visit 4 Other Poetries by Shehzad Aslam Raja »
 Reviews & Comments
Bohat kamaal likha ha...kisi ke jazbaat ki Kya khoob akasi ki ha...Aap shair log bhi ajeeb naimat Hain dukh lazon main bayan kar detay Hain..Warna log to sath reh kar bhi ankhon ki nami ka sabab na Jan patay Hain na jannay ki koshish kartay hain...God bless you
By: Fatima, Islamabad on Jul, 20 2018
Reply Reply to this Comment
ڈئیر السلام و علیکم
شہزاد راجہ
آپ میں بہت ٹیلنٹ ہے خوب لکھیے میری دعائیں آپ کے ساتھ ہیں اللہ پاک اور کرے آپکی قلم کو زور آور
ڈھیروں دعاوں کے ساتھ
By: riaz munis, rahim yar khan on Dec, 20 2011
Reply Reply to this Comment
خاصی محنت کی ہے جو کہ واضع بھی ہو رہی ہے۔
بہت ہی کمال خواہشیں ظاہر کی گئی ہیں۔
خُدا آپ کی نصرت فرمائے!
By: imran Gohar, Faisalabad on Jun, 22 2011
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.