یہ پیرہن جو مری روح کا اتر نہ سکا

Poet: Fahmida Riaz
By: kehkashan, khi

یہ پیرہن جو مری روح کا اتر نہ سکا
تو نخ بہ نخ کہیں پیوست ریشۂ دل تھا

مجھے مآل سفر کا ملال کیوں کر ہو
کہ جب سفر ہی مرا فاصلوں کا دھوکا تھا

میں جب فراق کی راتوں میں اس کے ساتھ رہی
وہ پھر وصال کے لمحوں میں کیوں اکیلا تھا

وہ واسطے کی ترا درمیاں بھی کیوں آئے
خدا کے ساتھ مرا جسم کیوں نہ ہو تنہا

سراب ہوں میں تری پیاس کیا بجھاؤں گی
اس اشتیاق سے تشنہ زباں قریب نہ لا

سراب ہوں کہ بدن کی یہی شہادت ہے
ہر ایک عضو میں بہتا ہے ریت کا دریا

جو میرے لب پہ ہے شاید وہی صداقت ہے
جو میرے دل میں ہے اس حرف رایگاں پہ نہ جا

جسے میں توڑ چکی ہوں وہ روشنی کا طلسم
شعاع نور ازل کے سوا کچھ اور نہ تھا

Rate it:
25 Jan, 2019

More Fahmida Riaz Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Owais Mirza
Visit Other Poetries by Owais Mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Usually I can read the some poetries from here because here comes every poetry first of mine favorite writer that’s why I just cone it for read that

By: tooba, lahore on Mar, 08 2019

Fahmida Riaz was one of the famous poet who recently died, the way when she wrote poetry gives the feeling of sadness. She used such a difficult Persian language in the urdu poetry.

By: muneeb, hyderabad on Jan, 28 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City