ابن مریم

Poet: Asad
By: Asad, mpk

 کہاں تک لکھوں اپنے غم کے فسانے کو ؟؟
جی چاھتا ھے بس آگ لگا دوں زمانے کو

کیوں صبر آزمائی کی تنہا بھروں قیمت ؟؟
بھاڑ میں جائے دنیا اور آگ لگے زمانے کو

بڑا سنبھال رکھا تھا یار کسی کی خاطر
مگر کوئی لوٹ لے گیا دل کے خزانے کو

ایک اکیلا میں تنہا مخلص ساتھ اسکے اور
اور کوئی نہیں وفادار نہین وفاداری نبھانے کو

خامشی میری کمزوری نہیں قطعاً جناب
تم کیوں چلے آتے ھو حشر کوئی برپانے کو

جب تمہیں ضرورت نہیں ساتھ اپنے کی حضور
پھر کیوں اکساتے ھو ھمیں وعدہ وفا نبھانے کو

ھے اسد ناسور عشق جسکا علاج ممکن نہیں
ھے عیسیا ابن مریم کوئی جو آئے مسیحانے کو

Rate it:
01 Feb, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Asad
Visit 48 Other Poetries by Asad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City