کانٹوں بھرا ہے رستہ یہ ، رستہ بدل کے دیکھ

Poet: اخلاق احمد خان
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

کانٹوں بھرا ہے رستہ یہ ، رستہ بدل کے دیکھ
ہر نقشہ بدل جائے گا تو ، نقشہ بدل کے دیکھ

دہشت گرد نہیں امن کا داعی کہے گی دنیا
چھوڑ ٹوپی داڑھی تو ، حُلیہ بدل کے دیکھ

جُڑ جائے گا تجھ سے بھی مستقبل وطن کا
کالج سے مدرسے کا ، بستہ بدل کے دیکھ

لاکھ ان کی حمایت کر یہ راضی نہیں ہونگے
کفر یہی چاہے گا تو ، کلمہ بدل کے دیکھ

قانون کی ذرا سی غفلت نے " ساہیوال " میں
پل بھر میں رکھ دیا گھر ، ہنستا بدل کے دیکھ

داستانِ نقیب سے بھی اُکتا چکے ہیں لوگ
ماحول گرمانے کو تو ، قصّہ بدل کے دیکھ

تو چاہتا ہے سب میں دیکھنا اوصافِ ملائک
خود کو بھی ذرا صفتِ ، فرشتہ بدل کے دیکھ

حُکمِ خُدا پر دل کب خود سے چلا ہے
اخلاق تو دل کو اپنے ، دانستہ بدل کے دیکھ

Rate it:
05 Feb, 2019

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 83 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City