مرجھا گئے ہیں غنچے تتلی کی عاشقی میں

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

اب ہیں خزاں کے ڈیرے گلشن کی تازگی میں
مرجھا گئے ہیں غنچے تتلی کی عاشقی میں

اس ظاہری محبت ، دو دن کی زندگی میں
ہم نے لٹا دیں خوشیاں دیکھو خوشی خوشی میں

اب کیا خوشی سے جھومیں ، اب کیسے مسکرائیں
اس کا نہیں گزر اب دل کی مری گلی میں

نوکِ سناں پہ بھی سر جھکنے نہیں ہے پایا
اندازِ فاتحانہ دیکھا ہے رہبری میں

جب پانیوں کے اوپر لکھے وفا کے قصے
پھر کیسے ڈھونڈ پائیں اخلاص دلبری میں

یہ آنگ سان سوچی برما کی خاک چاٹے
ہو یہ ذلیل و رسوا دنیا کی ہر گلی میں

چہرے پہ لے کے چہرہ میک اپ زدہ جہاں میں
جینا ہی چھن گیا ہے وشمہ جی سادگی میں

Rate it:
09 Mar, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City