لرزش عشق کی تادیب مجھے لے ڈوبی

Poet: حیاء غزل
By: Haya Ghazal, Karachi

لرزشِ عشق کی تادیب مجھے لے ڈوبی
رنجشِ یار کی تعذیب مجھے لے ڈوبی

حاشیئے کھینچ کے عادی تھی سطر لکھنے کی
زندگی میں یہی ترتیب مجھے لے ڈوبی

حوصلہ ہوتا اگر تیرا قصیدہ لکھتی
تجھ گریزاں کی تو تشبیب مجھے لے ڈوبی

میں نے نفرت کا صلہ اسکو محبت سے دیا
میرے پُرکھوں کی یہ تہذیب مجھے لے ڈوبی

اس زمانے نے میاں ہم کو بھی للچایا بہت
زہدِ مکار کی ترغیب ہمیں لے ڈوبی

درد کو نم سے ملاتی تھی بناتی تھی ہنسی
کیمیا سازی کی ترکیب مجھے لے ڈوبی

کچھ بھی پوجا نہ سوا ایک بتِ بے پرواہ
خانہء دل کی یہ تنصیب مجھے لے ڈوبی

میں نے انکار کیا جھوٹے خداؤں کا حیا
کیا اناؤں کی یہ تکذیب مجھے لے ڈوبی ؟؟

Rate it:
30 Apr, 2019

More Urdu Ghazals Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Haya Ghazal
I am freelancer poetess & witer on hamareweb. I work in Monthaliy International Magzin as a buti tips incharch.otherwise i write poetry on fb poerty p.. View More
Visit 132 Other Poetries by Haya Ghazal »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City