وہ بندہ

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, پاکستان

وہ بندہ بزم میں مسرور بھی ہے
مری حق گوئی سے رنجور بھی ہے

مرے دل میں اُسی کا ہے ٹھکانہ
مری آنکھوں سے لیکن دور بھی ہے

دیارِ بے ہنر میں میرے فن کا
مخالف ہے مگر مجبور بھی ہے

اُسے ملنے چلے جاتے ہیں پھر بھی
وہ عشوہ باز ہے مغرور بھی ہے

وہ شاعر مر نہ جائے خلوتوں میں
وہ شاعر جو بہت مشہور بھی ہے

تجھے تنہائی میں ملنا ہے وشمہ
محبت کا یہی دستور بھی ہے

Rate it:
17 Aug, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4524 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Washma kasi ha buhat achi takhleq buht khubsurat andaz apky lafz dil ko chu jaty ha. Ayesha khan

By: Ayesha khan, D.pakistan on Sep, 08 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City