ابتلائے عشق مِیں ھوں

Poet: UA
By: UA, Lahore

ابتلائے عشق مِیں ہوں
مبتلائے عشق مَیں ہوں
اضطراب و بیقراری
میری روح میں بسی ہے
زودِ رنج ہوں میں رنقا
میرے ہونٹوں کی ہنسی ہے
کوئی کیا سمجھائے ہم کو
جب خرد ہی ساتھ نہ دے
جس کا ساتھ چاہتے ہوں
تقدیر اس کا ہاتھ نہ دے
ایسے میں سمجھانا مشکل
ہے دلِ بےتاب کا
توڑ ڈالے آئینہ
کوئی کیسے اپنے خواب کا
جانتا ہے بس وہی
عشق کی افتاد کیا ہے
جانتا ہے بس وہ ہی
جِس کے دل پہ آن وارد ہوں
بلائیں عشق کی
اے خرد مندو! یہاں سے جاؤ
اپنی راہ لو
اِس دلِ بیمار کو
اَب نہ کوئی صلاح دو
اپنے حال میں مگَن
رہتے ہیں اہلِ عشق بس
پوچھنے والوں کو
یہ کہتے ہیں اہلِ عشق بس
ابتلائے عشق مِیں ہوں
مبتلائے عشق مَیں ہوں

Rate it:
21 Aug, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: uzma ahmad
sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More
Visit 2967 Other Poetries by uzma ahmad »

Reviews & Comments

زودِ رنج ہوں میں عنقا
جس کا ساتھ چاہتے ہیں

By: Uzma, Lahore on Aug, 25 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City