’’وزارت خزانہ نے اسٹیٹ بینک اور پلاننگ کمیشن کوکمزور کیا‘‘

وزارت خزانہ کی پالیسی سازی میں بالادستی نے اسٹیٹ بینک آف پاکستان اور پلاننگ کمیشن کے کار منصبی کو متاثر کیا۔

یہ بات کارلٹن یونیورسٹی کے پروفیسر ڈٓاکٹر احسان چوہدری نے معروف ماہر معاشیات ڈاکٹر حفیظ پاشا کی کتاب ’’گروتھ اینڈ ایکولیٹی ان پاکستان‘‘ پر لکھے گئے اپنے تبصرے میں کہی۔

ڈاکٹر چوہدری نے ڈاکٹر پاشا کی اپنی کتاب میں لکھی گئی بصیرت افروز باتوں اور آراء کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ وزارت خزانہ ملک میں ایک اصل اور بنیادی پالیسی ساز ادارے کے طور پر ابھر کر سامنے آئی ہے۔

ڈاکٹر چوہدری نے کتاب کے ایک حصے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس میں یہ انکشافات کئے گئے ہیں کہ ملک میں اہم ترین معاشی پالیسی فیصلے کس طرح کئے جاتے ہیں۔

معاشی پالیسیوں کے دور رس تجزیات کے حوالے سے موزوں ترین ادارہ پلاننگ کمیشن ہونا چاہئے لیکن وہ محض منصوبوں کی منظوریاں دینے تک محدود ہو کر رہ گیا ہے۔

وزارت خزانہ کی بالادستی اسٹیٹ بینک کے کردار کو کمزور کرتی ہے، اس حوالے سے کتاب میں ایک مثال کے ذریعے بتایا گیا ہے کہ حکومت بجٹ خسارے کو کم کرنے کی خاطر بینک کو زیادہ نوٹ چھاپنے پر مجبور کرتی ہے جس سے افراط زر میں اضافہ ہوتا ہے۔

ڈاکٹر چوہدری کے مطابق ملکی معیشت کو جاننے کیلئے یہ کتاب ایک بیش قیمت ذریعہ ہے اور وہ قارئین بھی جو ملکی معیشت کے حوالے سے خاصے باخبر ہیں دلچسپ حقائق سے روشناس ہوں گے۔ تاہم ان حضرات کو مایوسی ہو گی جو یہ سمجھ کر کتاب پڑھیں گے کہ اس میں کم پیداوار اور عدم مطابقت جیسے مسائل کے حل درج ہوں گے۔

انگریزی میں اس خبر کو پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں۔

 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.