صرف قادیانی ہی زیرِ اعتاب کیوں!

(Nazar haffi, اسلام آباد)

عاطف رحمان میاں ایک پاکستانی نژاد امریکی ماہر اقتصادیات ہیں۔ 2014ء میں بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے عاطف میاں کو دنیا کے پچیس بہترین نوجوان ماہرین اقتصادیات میں شمار کیا ہے۔ حکومت کی جانب سے احمدیہ جماعت سے تعلق رکھنے والے ماہر اقتصادیات عاطف میاں کو اقتصادی مشاورت کونسل میں شامل کیا گیا تھا جس پر بعض سیاسی جماعتوں اور سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی گئی تھی، وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ حکومت نے عاطف میاں کی اقتصادی مشاورتی کمیٹی سے نامزدگی واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے، سینیٹر فیصل جاوید نے کہا ہےکہ عاطف میاں کے متبادل کا اعلان جلد کیا جائے گا۔

عاطف رحمان میاں کے مخالفین مرزائیوں کو ایمان کے ڈاکو قرار دیتے ہیں اور یہ تو ہم جانتے ہی ہیں کہ ہمارے ہاں ڈاکو راج ہے، جس کی لاٹھی ہے اسی کی بھینس ہے، چنانچہ ڈاکو کو ڈاکو کہنا ہی مشکل ہوگیا ہے، بلکہ بعض ڈاکو تو مجاہد بھائی کہلاتے ہیں۔ ہمارے ہاں کے یہ مجاہد بھائی لوگوں کو اغوا کرتے ہیں، پبلک مقامات پر خود کش دھماکے کرتےہیں، مساجد ہوں یا مندر یا کوئی چرچ وہاں دہشت گردی کی واردادتیں کرتے ہیں ، سکولوں میں کم سن بچوں پر شبخون مارتے ہیں لیکن اس کے باوجودوہ مرزائیوں کی طرح ڈنکے کی چوٹ پر کہتے ہیں کہ وہ ختم نبوت پر یقین رکھتے ہیں اور عاشقِ رسولﷺ ہیں وغیرہ وغیرہ۔

کسی میں یہ جرات نہیں کہ وہ کسی مجاہد بھائی سے پوچھے کہ ختم نبوت پر یقین کا تقاضا تو یہ ہے کہ تم ختمی المرتبت ﷺ کی امت پر رحم کرو اور چھوٹے بچوں سے شفقت کے ساتھ پیش آو لیکن تم تو امت مسلمہ پر ظلم کرتے ہو اورچھوٹے بچوں کو خاک و خوں میں غلطاں کرتے ہو ، تمہارے کرتوت تو ختم نبوت کے پیغام کے سراسر خلاف ہیں۔

قادیانیوں کی طرح یہ مجاہد بھائی بھی اپنے آپ کو ختم نبوت کا منکر نہیں کہنے دیتے لیکن عملاً امت مسلمہ کے بدترین دشمن ہیں، چونکہ پاکستان آرمی جہان اسلام کی بہترین فوج ہے اور پاکستانی قوم ایک باوقار مسلمان قوم ہے لہذا یہ لوگ پاکستانی فوج اور قوم سے بدترین بغض رکھتے ہیں، یہ پاکستان فوج کو ناپاک فوج کہتے ہیں، پاکستانی فوجیوں کے سروں سے فٹبال کھیلتےہیں، پاکستانی جوانوں کو موقع ملتے ہی جانوروں کی طرح ذبح کرتے ہیں، پاکستانی پولیس اور ایف سی کی تاک میں لگے رہتے ہیں پاکستانی عبادتگاہوں میں خود کش دھماکے کرتے ہیں، اب تک انہوں نے پاکستان کو بہترین اور قیمتی دماغوں سے محروم کیا، ملک و قوم کا سرمایہ سمجھے جانے والے پولیس اور فوج کے جوانوں کو موت کے گھاٹ اتارا، سعید چشتی جیسے قوال کو گولیوں سے بھون ڈالا، آرمی پبلک سکول میں ننھی منھی کلیوں کو مسل ڈالا اور بچوں کے سامنے اساتذہ کو زندہ آگ لگا دی، محبت کے مراکز داتا دربار سے بری امام تک انہوں نے متعدد اولیائے کرام کے مزارات پر خود کش دھماکے کئے ، مکر وفریب کے ان پتلوں نے ایک فرقے کو بدنام کرنے کے لئے راجہ بازار راولپنڈی میں خود ہی اپنے مدرسے کو آگ لگائی اور اپنے مسلک کے لوگوں کو قتل کیا لیکن اس کے باوجود ان کا دعویٰ ہے کہ یہ ختم نبوت کے علمبردار ہیں۔

ان کا عمل اس بات پر گواہ ہے کہ یہ بھی قادیانیوں کی طرح جھوٹ بھول رہے ہیں اور ختم نبوت کے عقیدے کو بغل میں چھری اور منہ میں رام رام کے طور پر استعمال کر رہے ہیں۔

یہ لہو سے دھلا ہوا پاکستان ، اہلیانِ پاکستان سے یہ اپیل کرتا ہے کہ ختم نبوت کے جھوٹے نعرے لگانے والوں کو بے نقاب کیا جائے اور جس طرح مرزائیوں کو پاکستان میں کوئی کلیدی عہدہ نہیں ملنا چاہیے اسی طرح ختم نبوت کے ان جھوٹے ٹھیکیداروں کو بھی پاکستان میں کسی اہم پوسٹ پر تعینات نہیں کیا جانا چاہیے۔
عدل و انصاف کا تقاضا ہے کہ پاکستان کے ان دشمنوں کے خلاف، مرزائیوں کی طرح فوری کارروائی کی جائے اور ان کے ہم مشرب و ہم عقیدہ لوگوں کو جلد از جلد بنیادی پوسٹوں سے ہٹایا جائے۔

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
07 Sep, 2018 Total Views: 486 Print Article Print
NEXT 
About the Author: nazar

Read More Articles by nazar: 96 Articles with 13378 views »

Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
Reviews & Comments
مرزائی کافر ہیں ... ختم نبوت زندہ باد۔۔ اسلامی جمہوریہ پاکستان پائندہ باد
By: Mian Shahid, Lahore on Sep, 24 2018
Reply Reply
0 Like
Qadiani ki himayat koi qadiani hee karsakta ha ya jisko unki islam dushmani ka andaza nahi. and I totally agree with @sabeel and @saleem Ullah bhai. Qadianis have done enough damage to Pakistan by assisting in dividing Pakistan into two (1971) so please first look into history and making of qadiayaniat
By: Saeed Hashmi, Calgary, Canada on Sep, 10 2018
Reply Reply
0 Like
SaleemUllah Shaikh aur Sabeel se may muttafiq hon.

Writer kafi biased nazar aata hay aur ye article sirf apnay dil ki bharas nikalnay k liye, haqaiq k manafi likha hay aur khod wohi kaam kia hay jis se roknay ki is article main request ki gai hai, yani sirf aik makhsoos maktaba e fikr ko nishana banaya hay aur sara terrorism un k sir marh diya hay sirf is liye k wohi tabqa mirzaion ko sb se ziada tough time deta he.

Writer mirzai hay ya nahi Allah Paak behtar Jantay hain, lekin us ki tamam hamdardian mirzaaion k saath zaroor hain

Neechay jo likha gya hai, shyd Hamariweb ki janib se,

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ

Ye tabhi mumkin hain agar aap esi tehreeron ko bhi publish na karain. Ye insaf k manafi hoga k aap aik writer ko tau khula haq dain k vo jo g chahay likh maray Hamariweb per, lekin aap us corrupt article se jin ki dil aazaari hui unko kahain k tum kuch na kaho, ya agar kehna hey tu HATH HOLA RAKHO
By: Shahid, Lahore on Sep, 10 2018
Reply Reply
0 Like
آپ نے دہشت گردوں کو تمام مسلک کے ساتھ منسلک کردیا باالفاظ دیگر آپ نے ایک مخصوص مسلک کو دہشت گرد قرار دیا ہے۔ علاوہ ازیں آپ کے مضمون میں خصوصی طور پر ختم نبوت والوں کا ذکر کیا گیا ہے۔ یہ بالکل غلط ہے کیوں کہ تحفظ ختم نبوت ایک بالکل الگ قسم کا فورم ہے اور ان کا کسی بھی قسم کی دہشت گردی یا تخریب کاری سے کوئی تعلق نہیں ہے رہی بات ان لوگوں کی جو اسلام کے نام پر دہشت گردی کرتے ہیں ، وہ اسلام کو بدنام کرتے ہیں۔ معذرت کے ساتھ عرض کردوں کہ ہم کہتے یہ ہں کہ دہشت گرد کا کوئی مذہب نہیں ہوتا لیکن جو سیاسی دہشت گرد پکڑا جائے ، ہم کبھی اس کے عقیدے کا مسلک کا ذکر نہیں کرتے اس کے برعکس مذہبی دہشت گرد پکڑا جائے تو اس وقت سارے اصول دھرے رہ جاتے ہیں اور سب لوگ دہشت گرد کے عقیدے اور مسلک پر تنقید شروع کردیتے ہیں۔ جب کہ یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ شہر قائد میں بالخصوص اور پورے ملک میں بالعموم جو سیاسی ٹارگٹ کلنگ گزشتہ ١٥ برسوں میں ہوئی ہے وہ سیاسی سے زیادہ مسلکی بنیاد پر ہوئی ہے لیکن سب لوگ جان بوجھ کر اس بارے میں زبان نہیں کھولتے ورنہ طارق روڈ پر علما کا قتل، ملک غلام مرتضٰی صاحب کا لاہور میں قتل، علامہ یوسف بنوری کا قتل، مفتی شامزئی کا قتل، اعظم طارق کا قتل ، سکھر میں مولانا سومرو کا قتل یہ سب سیاسی سے زیادہ مسلکی قتل ہیں لیکن کسی میں ہمت نہیں ہے کہ وہ ان کے قتل میں ملوث فرقے کے لوگوں کی شناخت ان کے فرقے سے کرے۔
By: Saleem Ullah Shaikh, Karachi on Sep, 10 2018
Reply Reply
0 Like
نذر حافی صاحب آپ کے اس مضمون سے قادیانیوں کی حمایت کی بو آتی ہے
اور جہاں تک نام نہاد مجاہدین کا تعلق ہے تو ہم تو ان کو بھی مسلمان نہیں سمجھتے قادیانیوں کی طرح یہ طالبان اور نام نہاد مجاہدین یہود ونصاریٰ کے خود کاشتہ پودے ہیں میرے بھائی آپ کے نام سے تو ظاہر ہو رہا ہے کہ شائد آپ بھی ؟
By: sabeel, Lahore on Sep, 08 2018
Reply Reply
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB