“ چاہ “

(Zeena, Lahore)

اللہ تعالی کی آزمائش جو ہر کسی کہ لئے نہیں ہوتی بعض دفع اللہ اپنے بندے کو خود سے قریب کرنے کے لئے اسے آزمائش میں ڈال دیتا ہے۔ اسکے دل میں ایسی شہ کی محبت ڈال دیتا ہے جو اسکے لئے نہیں ہوتی پھر اسکو اس کے ہاتھوں سے توڑ کر کہتا ہے،،، اب بتا کون ہے تیرا میرے علاوہ ؟ پھر وہ بندہ عشق مجاذی سے عشق حقییقی کو پا لیتا ہے۔

میں ایک ہس مکھ لڑکی، جس کو لوگ پوچھا کرتے تھے ، تم اتنی خوش کیسے رہ لیتی ہو ؟ تو میں ہس کر کہتی تھی پتا نہیں ،،،، میں اپنی ہی دنیا میں رہنے والی لڑکی تھی۔ خوش رہنا خوشیاں بانٹنا ، بڑی سے بڑی بات کو “ کوئی میں ایک ہس مکھ لڑکی، جس کو لوگ پوچھا کرتے تھے ، تم اتنی خوش کیسے رہ لیتی ہو ؟ تو میں ہس کر کہتی تھی پتا نہیں ،،،، میں اپنی ہی دنیا میں رہنے والی لڑکی تھی۔ میرا نام ظہور انسا ہے، مگر پیار سے سب مجھے ظہور کہ کر پکارتے تھے۔ خوش رہنا خوشیاں بانٹنا ، بڑی سے بڑی بات کو “ کوئی نہیں “ کہ کر ٹال دینا۔ ہر ایک کی مدد کرنا، میری بہت ساری دوستیں تھی پر بوائے فرینڈ کوئی نہیں تھا۔ اسکی وجہ یہ نہیں کہ میں پیاری نہیں تھی۔ اچھی ہائٹ ، گورا رنگ ، لمبے بال مجھ میں وہ ہر کوالٹی تھی۔ جسے لوگ دیکھ کر پہلی نظر میں ہی پسند کر لیا کرتے تھے۔ مجھ پر بہت سے لڑکوں نے قسمت آزمائی پر میں کسی کو خاطر میں نہیں لائی، کچھ نے شرط تک لگا کر قسمت آزمائی پر کسی کی دال نہیں گلی۔
میری بچپن سے سب سے زیادہ دوستی اللہ سے تھی۔ ہر بات رات کو سونے سے پہلے اللہ سے شئیر کیا کرتی تھی، اللہ سے باتیں کرتے کرتے جانے کب سو جاتی تھی پتہ ہی نہیں چلتا تھا۔ وہ چپ چاپ میری ڈھیر ساری باتیں سنا کرتا تھا۔ آھستہ آھستہ میں نے وہ سارے کام شروع کر دیئے جو اللہ کو پسند تھے۔ مجھے پہلا عشق اللہ سے ہوگیا۔ تب میں نے پڑھا کہ عورت کا مطلب ڈھکی چھپی ہوئی چیز،، تب میں نے اپنے گرد ایک دائرہ کھینچ لیا کہ میری زندگی میں میرے شوہر کے سوا کوئی مرد نہیں آئے گا۔ نہ کوئی مجھے دیکھے گا نہ میں کسی سے بات کروگی۔ میرے گرد اس دائرے پر درار تب پری جب مجھے میری دوست کی کال آئی۔
“اسلام و علیکم“ فون اٹھانے پر دوسری طرف سے آواز آئی۔
“ والسلام ،،،، کیسی ہو ؟ “ میں نے کہا
ٹھیک ہوں تم کیسی ہو ظہور ؟ “ دوسری طرف سے پوچھا گیا۔
“ میں اچھی ہاہاہا “ ایک تو تم ہنستی بہت ہو ،،،، “ میرے بیٹی ہوئی ہے “
“ ارے واہ اللہ نے رحمت بھیجی بہت بہت مبارک ہو ،،، کہاں ہو ہوسپٹل کہ گھر ؟ “ میں نے خوشی سے پوچھا۔
“ گھر آگئی ہوں اپنے سسرال ہوں، آجاؤ تم اب لگا لو چکر کب سے کہ رہی ہوں۔“ دوسری طرف ہلکی سی ناراضگی سے کہا گیا۔
“ اب تو ضرور آؤ گی بیٹی جو دی اللہ نے مجھے لڑکیاں بہت پسند ہیں۔“
“ ہاں دیکھو گی، کب آتی ہو،،، اچھا میں پھر بات کرتی ہوں آئمہ اٹھ گئی ہے۔ “ دوسری طرف جلدی سے کہا گیا۔“
“ ارے واہ آئمہ بہت پیارا نام ہے ماشااللہ، چلو ٹھیک ہے اللہ حافظ ۔“ میں نے اتنا کہ کر کال کٹ کردی۔
میں نے جلدی دے اپنی آپی ، بھائی سب کو بتایا کہ میری دوست کے گھر رحمت آئی ہے۔ ساتھ ہی یہ اعلان بھی کر دیا کہ مجھے اسکے گھر جانا ہے تو جانا ہے۔ میں بہت ضدی تھی۔ اپنے بابا سے زیادہ بڑے بھائی سے ضد کیا کرتی تھی۔ جب تک بڑے بھائی نے لے جانے کی ہامی نہ بھر لی میں نے انکی جان نہیں چھوڑی۔
میں نے تھوڑا سا آگے ہو کر دیکھا تو ایک لڑکا کھڑا تھا۔ شاید یہ ہی ہمٰیں لینے آیا ہوگا کیا پتہ شیزا کا دیور ہو۔
“ کیا یہ شیزا کا دیور ہے ؟ “ میں جو ابھی سوچ رہی تھی میری بہن نے مجھ سے وہ پوچھ ہی لیا۔
“ ہو سکتا ہے کتنے سارے تو اسکے دیور ہیں،، ہاہاہا “ میں ہنسنے لگ گئی۔
“ توبہ اتنے بھی نہیں بس چار ہیں “ میری بہن نے مجھے گھورتے ہوئے کہا۔
پھر ہم اسکی ہمراہی میں اسکے پیچھے گاڑی دوڑاتے انکے گھر پہنچ گئے۔ گھر ایک تنگ گلی میں تھا، اور مجھے یہ دیکھ کر بری حیرت ہوئی کہ سب ہمارے انتظار میں باہر ہی کھڑے تھے۔ شیزا کی ساس، سسر ، اسکا شوہر سب ہی بڑے اچھے طریقے سے ملے۔ مجھے وہ لوگ بڑے ہی اچھے لگے سادہ سے لوگ تھے۔کچھ دیر باتیں ہوتی رہی باتوں باتوں میں شیزا نے اپنے شوہر سے چھوٹے دیور کی بات کی، میں سمجھ گئی کیونکہ وہ مجھ سے پہلے بھی اس ٹاپک پر بات کر چکی تھی۔ میں نے اسے سیدھے لفظوں میں اپنی بڑی بہن کا کہا۔ اسنے فورا سے کمرے سے باہر جا کر بات کی، مجھے اسکی جلد بازی پر حیرت ہوئی اور عجیب بھی لگا۔ وہ دوبارا اپنے بچوں کو کمرے میں لے کر آئی۔ اسکے دونوں بچے ما شااللہ بہت پیارے تھے، اسنے پھر باتوں باتوں میں کہا،،،، “ وہ دونوں کا کہ رہے ہیں کہ بڑے کہ لئے بڑے کا اور چھوٹی کہ لئے چھوٹے کا۔“ مجھے اس وقت حیرت کا شدید جھٹکا لگا اور میں اسکے منہ کی طرف دیکھنے لگ گئ لیکن اسکا دھیان میری طرف نہیں تھا، وہ اپنے کام میں مصروف تھی۔
“ اسکو تو میں بعد میں پوچھو گی۔ “ میں نے دل میں سوچا۔ میرے لئے یہ حیرت کی بات نہیں تھی معمولی سی بات تھی کیونکہ میں جہاں جاتی تھی وہاں سے رشتہ کا پیغام آجاتا تھا۔ میں نے اسے بھی سر سری ہی لیا۔
“ کون ہیں تمہاری چھوٹی کہ لئے چھوٹا دیور “ میں نے زبردستی مسکراتے ہوئے پوچھا۔
“ ارے وہی جو تم لوگوں کو لینے گیا تھا۔ یہ میرے لئے حیرت کا دوسرا جھٹکا تھا۔ جانے کیوں مجھے حیرت ہی ہوئی جا رہی تھی۔ وہ پھر جو اسکی تعریفیں کرنے لگی مجھے اس میں کوئی انٹرسٹ نہیں تھا، اس لئے بے دلی دے ادکی باتیں سنتی رہی۔ ( جاری ہے )
 

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
19 Oct, 2018 Total Views: 1416 Print Article Print
NEXT 
About the Author: Zeena

I Am ZeeNa
https://zeenastories456.blogspot.com
.. View More

Read More Articles by Zeena: 90 Articles with 84961 views »
Reviews & Comments
Ma Sha Allah Bht Kamaal Ka Likha Aap ny Behna G
Itne Interesting hai Next Part Ka Be chaine Sy Wait Kr Rha
By: Abdul Kabeer, Okara on Oct, 23 2018
Reply Reply
0 Like
thank you so much bhai ,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 24 2018
0 Like
thank you so much bhai ,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 24 2018
0 Like
Awsome story..Good luck to you for new startup💕
By: Maham, Okara on Oct, 23 2018
Reply Reply
0 Like
thnx maham ,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 24 2018
0 Like
Waaah starting bhut he kamal ki hai bht achi story lag rhi hai umeed hai agy chal k bh achi ho gi aur jaldi sy next epi post kariye ga
By: Ali Raza, Rawalpindi on Oct, 22 2018
Reply Reply
0 Like
pasand karne ka shukriyaa koshish tou yahi hai next episode aj hi post krdooo ,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 23 2018
0 Like
Nice best of luck
By: ACE, Khushab on Oct, 22 2018
Reply Reply
0 Like
thnx ,,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 24 2018
0 Like
Starting to bhot kamal ki hai,,,,aur ghalti sb sy hi hu jati ,,,,tu parshan mat hu tum us k liye,,,,aur abh jaldi sy next epi post kar dena,,,kafi interesting lagh rhi hai story..!!!!
By: Mini, mandi bhauddin on Oct, 22 2018
Reply Reply
0 Like
aj next epi post krdo ge thnx for like ,,, ap bhi kuch likheye mujhe mahi ke next epi ka bht wait hai himmat nahi harain likhte rahiye ,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 23 2018
0 Like
Asalm.alikum nice zeena.masha allah bhot achi likha hy
By: Abrish anmol, pindi on Oct, 22 2018
Reply Reply
0 Like
w salaam abrish sis thnx for like ap kab likh rahi hai jaldi se kuch likh kar phenke main besabri se kech krne ke liye tear hn hehehehhe ,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 23 2018
0 Like
assalam o alaikum hamariweb ke members main taqreeban 6 month k bad likh rahi hn. likht2 time thora confused thi shaid apna best nahi de pai kher wo ap log comments main bata sakte hai per kahani ke starting main mujhe se aik line 2 bar edit ho gai jis ke liye mazrat chahti hn shukriyaaa ,,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 22 2018
Reply Reply
0 Like
thnx
By: Zeena, Lahore on Oct, 23 2018
0 Like
walikumasalam wr wb bhoot acha likhti hai ap is main koi shaq nahe pely ki tarhan is bar bi ap bhoot acha likha rahi hai :)
By: Waleed, Haripur on Oct, 22 2018
0 Like
complete kab karein gyi story wait rahy ga .. bhoot time bad ap ne likha yahe dua ALLAH pak har larki k naseeb achy kary Ameen ALLAH pak ap ko sehat ata farmay ap ki har mushkal asan farmay
By: Waleed, Hariput Hazara on Oct, 22 2018
Reply Reply
0 Like
ameen thnx itne sari duaoun ke liye, complete in sha ALLAH jald hi krlo ge, kuch masrofiat ki bina par likh nahi saki ab in shaa ALLAH likhte raho ga shukriyaaaaa ,,,,,,, :)
By: Zeena, Lahore on Oct, 23 2018
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB