پریانکا نے شاہ رخ کے ساتھ تعلقات کے حوالے سے خاموشی توڑ دی, ایسی کیا بات کہ دی جو آج کی عالمی میڈیا کی سُرخیوں کا حصہ بن گئی، کس اداکارہ سے دشم

16 Apr, 2018 روزنامہ اوصاف
ممبئی(ویب ڈیسک) بالی ووڈ کی صف اؤل کی اداکارہ پریانکا چوپڑا نے شاہ رخ خان کے ساتھ تعلقات اور کرینہ کپور کے ساتھ دشمنی کی افواہوں سے متعلق خاموشی توڑ دی۔ان کا کہنا تھا کہ میں ان تمام افواہوں کی تصدیق یا تردید نہیں کروں گی جو میرے اور شاہ رخ خان کے متعلق میڈیا میں گردش کرتی رہتی ہیںاداکارہ پریانکا چوپڑا کو اپنے کیریئر کے دوران کئی اسکینڈلز اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، میڈٰیا پر خبریں گردش کرتی رہیں کہ پریانکا چوپڑا اور کرینہ کپور ایک دوسرے کی سخت حریف ہیں جبکہ اکشے کمار کیساتھ دونوں اداکارائیں فلم ’’اعتراض‘‘ میں بھی نظر آئیں تاہم اس فلم کے بعد ہی دونوں کی دشمنی میں مزید اضافہ ہو گیا تھا اور دونوں نے ایک دوسرے کے ساتھ کام کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ --> ایک شو کے دوران پریانکا نے کرینہ کے ساتھ اپنی دشمنی کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا تھا میں بہت ایمان دار ہوں اور مجھے معلوم ہے کون میرا دوست ہے اور کون نہیں جو لوگ میرے دوست ہیں انہیں میں خود سے قریب رکھتی ہوں۔فلم’’ہیروئن‘‘کی ریلیز کے بعد کرینہ نے پریانکا پر تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کی فلم پریانکا کی فلم’’فیشن‘‘سے کہیں زیادہ بہتر ہے کیا ہوا اگراس نے نیشنل ایوارڈ نہیں جیتا؟ جس پر پریانکا نے کرینہ پر طنز کرتے ہوئے کہا تھا کہ کرینہ پر انگور کھٹے ہیں والی مثال فٹ بیٹھتی ہے۔دوسری جانب بھارتی میڈیا کے مطابق فلم ’’ڈان2‘‘کی شوٹنگ کے دوران اداکارہ پریانکا چوپڑا اور شاہ رخ خان کے درمیان قربتوں کی افواہیں میڈیا میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی تھیں۔ ان افواہوں کی وجہ سے ’’ڈان2‘‘ کے بعد یہ دونوں اداکار ایک ساتھ کسی فلم میں نظر نہیں آئے تاہم پریانکا نے کبھی اپنے اور شاہ رخ خان کے درمیان تعلقات کی تردید نہیں کی۔ایک شو میں بالی ووڈ کنگ شاہ رخ خان کے ساتھ تعلقات کے بارے میں بات کرتے پریانکا کا کہنا تھا کہ میں ان تمام افواہوں کی تصدیق یا تردید نہیں کروں گی جو میرے اور شاہ رخ خان کے متعلق میڈیا میں گردش کرتی رہتی ہیں، کیونکہ ہم عوامی شخصیات ہیں اور یہ تمام افواہیں اور اسکینڈلز ہماری زندگی کا حصہ ہیں۔ ہماری زندگیوں میں کیا چل رہا ہے لوگوں کو یہ جاننے کا حق ہے۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: