سر رہے سجدے میں اپنا بندگی اتنی تو ہو
Poet: م الف ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

سر رہے سجدے میں اپنا بندگی اتنی تو ہو
حاضری روضہ پہ ہو یہ زندگی اتنی تو ہو

آپﷺ آئیں سامنے جب ہو مرا وقت آخری
میں کروں دیدار پھر موجودگی اتنی تو ہو

میں پھروں مکہ مدینہ آپ کی الفت میں یوں
حال میرا جو بھی ہو دیوانگی اتنی تو ہو

نعت سے پر نور کر لو اپنے روز و شب یہاں
مصطفیٰﷺ کے عاشقوں کی عمدگی اتنی تو ہو

دید سے انﷺ کی نوازے گا خدائے پاک بھی
انﷺ کی مدحت میں تمہاری شاعری اتنی تو ہو

دیکھ لوں روضہء اطہر کو میں اپنی آنکھ سے
یہ دعا ہے رب سے میری حاضری اتنی تو ہو

وہ کریں میری شفاعت آس یہ دل میں رہے
جام وہ مجھ کو پلائیں تشنگی اتنی تو ہو

روزِ محشر جب نظر آئیں محمد مصطفیٰﷺ
ہچکیوں سے رو پڑوں شرمندگی اتنی تو ہو

انﷺ کی عظمت کر بیاں ارشیؔ تو بے خوف و خطر
تجھ کو اپنے دین سے وابستگی اتنی تو ہو
 

Rate it: Views: 8 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 05 Dec, 2018
About the Author: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi)

My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More

Visit 129 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.