طیبہ جیسی یہ فضا اور کہاں ہوتی ہے

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, اسلام آباد

طیبہ جیسی یہ فضا اور کہاں ہوتی ہے
ہر طرف نور کی بارش جو رواں ہوتی ہے

ان سے الفت میں تو لکھتی ہوں میں نعتیں اکثر
تر درودوں سے مگر میری زباں ہوتی ہے

جب بھی آتی ہے خیالوں میں سنہری جالی
میرے ہونٹوں پہ مدینے کی فغاں ہوتی ہے

میں نے دیکھی ہے مدینے میں برستی بارش
ابرِ رحمت وہ زمانے میں کہاں ہوتی ہے

کتنے خوش بخت ہیں وہ لوگ زمانے میں فقط
زندگی جن کی مدینے میں جواں ہوتی ہے

جب سے چھوڑی ہیں زمانے کی یہ وشمہ باتیں
میرے افکار سے مدحت ہی عیاں ہوتی ہے

Rate it:
08 Aug, 2019

More Religious Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4524 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City