Add Poetry

خون سے لتھڑے ہوئے دیوار و در دیکھے گا کون

Poet: تنہاؔ لائلپوری By: تنہاؔ لائلپوری, Faisalabad

خون سے لتھڑے ہوئے دیوار و در دیکھے گا کون
میرے پیچھے میرا بدبودار گھر دیکھے گا کون

کون جانے گا مرے حالاتِ اصلی میرے بعد
زندگی کی کس طرح میں نے بسر دیکھے گا کون

دیکھ بھی لے گا اگر کوئی مرے سینے کے داغ
پار سینے کے لگے زخمِ جگر دیکھے گا کون

لوگ تو دیکھیں گے منزل پر کھڑے انسان کو
کیسے مشکل راستوں پر تھا سفر دیکھے گا کون

آئینہ کہتا ہے مجھ سے اور میں آئینے سے
جس قدر میں دیکھتا ہوں اس قدر دیکھے گا کون

دیکھنے والی تو آخر ہو گی حالت آخری
دیکھنے والے کی حالت کو مگر دیکھے گا کون

ٹھان لی ہے، بن کے دیوانہ پھروں گا اور مجھے
کوچۂ دلبر میں تنہاؔ رات بھر دیکھے گا کون

Rate it:
Views: 241
22 Jan, 2023
Related Tags on Sad Poetry
Load More Tags
More Sad Poetry
Popular Poetries
View More Poetries
Famous Poets
View More Poets