ماں ٹھیک کہتی تھی۔۔۔۔۔!!!پارٹ سوم

(Naila Rani, karachi)

بحر حال ماں کچھ بھی سو چے ۔۔۔۔اس با ت کی تو واصف کو کوئی پرواہ نہ تھی ۔۔۔۔اسے تو وا صف ا یمو شنل بلیک میل کر کے سارے با تیں منوا سکتا تھا ۔۔۔۔جیسے آج تک منوا تا آ یا تھا ۔۔۔۔مشکل بس ایک تھی کہ سو یرا کو وہ اپنی طرف کیسے متو جہ کر ے ۔۔۔۔جو کہ پہلے سے نہ جا نے کتنے چکرو ں میں پھنسی ہو ئی تھی ۔۔۔۔اند ھی محبت نے وا صف کی ا نکھو ں پر پٹی با ندھ دی تھی ۔۔۔۔اور وہ کسی صورت بھی سو یرا کو کسی اور کی ہو تے نہیں د یکھ سکتا تھا ۔۔۔۔۔وہ سو یرا کی محبت میں پا گل ہو سا ہو گیا تھا ۔۔۔۔۔نہ تو اسے کچھ د کھا ئی دے رہا تھا اور نہ اب اسکا د ما غ کا م کر رہا تھا ۔۔۔۔۔جب را حیل نے اسے اسقدر تڑ پتے د یکھا تو ۔۔۔۔اس نے واصف کو مشورہ د یا ۔۔۔۔کہ وہ اپنی بھا بھی کے سا تھ بہا نے سے اسکے گھر جا ئے اور اسے اپنی طر ف متو جہ کر نے کی کو شش کر ے ۔۔۔۔واصف نے ایسا ہی کیا ۔۔۔۔۔وہ بھا بھی کے سا تھ اس کے گھر گیا ۔۔۔۔۔۔۔اور بہا نے بہا نے سے اسے گفٹ پیش کر تا ر ہتا ۔۔۔۔۔کبھی اسے شا پنگ پر لے جا تا ۔۔۔۔تو کبھی دو نو ں سیر سپا ٹن پر نکل جا تے ۔۔۔۔اسطر ح دونوں کی دوستی پکی ہو گئی ۔۔۔۔۔سویرا لوگو ں کا ما حول چو نکہ بہت کھلا تھا ۔۔۔۔اسپر کو ئی پا بندی نہ تھی۔۔۔پا بندی لگا تا بھی کو ن ۔۔۔۔با پ کا انتقال ہو چکا تھا ۔۔۔۔بھا ئی کو ئی تھا نہیں ۔۔۔۔اور ما ں کو بیٹیوں کی کو ئی پرواہ ہی نہ تھی ۔۔۔۔۔وہ تو خود دوسری شادی کے چکر میں تھی ۔۔۔۔۔۔انکا سب کچھ واصف کے سا منے تھا ۔۔۔۔بھا بھی جو سو یرا کی بہن تھی ۔۔۔۔۔۔واصف کے بھا ئی کا شف کی پسند تھی ۔۔۔۔۔۔وہ اسے بیا ہ کر تو لے آ یا تھا ۔۔۔۔۔مگر وا صف کی وا لدہ کو اس سے بے پنا ہ شکا یا ت تھیں ۔۔۔۔۔۔۔واصف کی والدہ نے کا شف کو بھی سمجھا یا تھا ۔۔۔۔مگر وہ نہ ما نا تھا ۔۔۔۔ابھی تک تو اسے کو ئی پچھتا وا نہ تھا مگر ۔۔۔۔اسکی ماں کا کہنا تھا کہ ایک دن وہ اسکی عادات و حر کا ت سے تنگ آ جا ئے گا ۔۔۔۔اسے نہ تو کسی کی پرواہ تھی اور نہ ہی وہ کسی کو منہ لگا تی تھی ۔۔۔۔بس اسے تو ایک ہی د ھن تھی کہ ۔۔۔۔۔۔کہ اسے اچھا د ھا ئی د ینا ہے ۔۔۔۔نہ صرف کا شف کو بلکہ سارے محلے کے مردوں کے سا منے وہ بن سنور کر نکلتی ۔۔۔۔۔اسکی سوچ کسی نسل کو پروان چڑ ھا نے کے قا بل نہ تھی ۔۔۔۔بھلا ایسی کیسے ایک نسل کی تر بیت کر سکتی ہے جس کی اپنی کو ئی تر بیت نہ ہو ئی ہو ۔۔۔۔۔۔سویرا بھی ہو بہو اپنی اپنی بہن کی کا پی تھی ۔۔۔۔۔ان دو نو ں بہنوں کا کل سر ما یہ انکی ادا ئیں اور اچھی شکل و صورت تھی ۔۔۔۔جس کے بل بو تے پر وہ دو نو ں معصوم بھا ئیوں وا صف اور کا شف کو پھا نسنے میں کا میا ب ہو گئیں تھیں
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: naila rani riasat ali

Read More Articles by naila rani riasat ali: 104 Articles with 108842 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
26 Jul, 2017 Views: 1837

Comments

آپ کی رائے