دہشت گردی کا دی اینڈ

(Sarwar Siddiqui, Lahore)

ایک لڑکے نے اپنے دوستوں سے کہا میری اداکارہ میرا سے شادی کی بات چیت چل رہی ہے ۔۔۔دوستوں نے کہا کوئی امید بھی ہے ۔۔اس نے جواب دیا معاملہ ففنی ففٹی پر اٹکا ہوا ہے
وہ کیسے؟ دوستوں نے دریافت کیا میں مان رہا ہوں۔۔۔اس نے جواب دیا میرا نہیں مان رہی ۔۔۔یہی حال امریکہ اور طالبان کے درمیان مذاکرات کا تھا۔پاکستان کی عسکری وقومی قیادت اور عوام سب کی خواہش تھی کہ بات چیت کے ذریعے معاملہ سلجھ جائے مذاکرات اچھی بات ہے لیکن اگر دوسرا فریق بھی اس کیلئے سنجیدہ ہوتو پھر ممکن ہے معاملہ سلجھ جائے لیکن پھر بھی کامیابی یا ناکامی بارے حتمی طورپرکچھ نہیں کہا جا سکتا اب وزیر ِ اعظم عمران خان نے دورہ ٔ امریکہ میں بانگ ِ دہل کہا تھا کہ افغانستان میں مداخلت غلطی تھی اب اس کے تناظرمیں مسائل بات چیت کے ذریعے حل کرنے کی ضرورت ہے یہ خواہش تو پاکستانی حکومتیں، عسکری قیادت سیاستدان اور عوام ایک عرصہ سے کررہے تھے کیونکہ افغانستان میں امریکی جنگ نے پاکستان میں دہشت گردی نے اس ملک کو بہت متاثرکیاہے جس سے انتہاپسندی نے جنم لیا مسلسل دہشتگردی کے واقعات نے قوم کو عجیب دوراہے پر لاکھڑا کردیا اس سلسلہ میں ِ پاکستان اورعوام نے بڑی قربانیاں دی ہیں پچاس ہزار سے زائد افراد شہید لاکھ سے زائد معذور اور اپاہچ ہو چکے ہیں جس کی وجہ سے حکومت اور فوج اپنے نقطہ ٔ نظر پر نظر ثانی کرنے پر مجبور ہو گئی۔۔ عام لوگوں کا خیال ہے کہ تحریک ِ طالبان سیمذاکرات ہی مسئلے کا واحدحل ہے یہ بات بڑی اہمیت کی حامل ہے کہ بیشتراسلام دشمن قوتوں بھارت اور اسرائیل نے پاکستان کوآج تک دل سے تسلیم نہیں کیا وہ پاکستان کو نقصان پہچانے کا کوئی موقعہ ہاتھ سے نہیں جانے دیتیں جب سے پاکستان ایٹمی قوت بناہے ان کے سینے پر سانپ لوٹ رہے ہیں اس لئے غالب خیال یہ ہے کہ پاکستان کے حالات خراب کرنے میں اسلام دشمن طاقتوں کا کلیدی رول ہے اسے کسی صورت نظر انداز نہیں کیا جا سکتا یہ بھی عین ممکن ہے کہ طالبان میں کچھ درپردہ پاکستان دشمن شامل ہوگئے ہوں جو افغانستان سے پاکستانی سیکورٹی فورسزپر حملے کرتے رہتے ہیں جب سے فوجی اورسیاسی قیادت نے‘‘ اپریشن ردالفساد‘‘ کے نام پر دہشت گردوں کے خلاف بے رحم اپریشن شروع کیاہے اس کے نہایت مثبت اثرات برآمد ہوئے ہیں جس سے دہشت گردوں کیکمر ٹوٹ رہی ہے اس کا مطلب یہ ہے کہ اب دہشت گردی کا دی اینڈ ہونے والا ہے۔یہ بات خوش آئندہے کہ بیشترسیاستدانوں نے اس کی مکمل حمایت کااعلان کردیاہے پاک فوج دہشت گردوں اور انتہا پسندوں کے ٹھکانے تباہ کررہی ہے انشاء اﷲ اپریشن ردالفساد قیام ِ امن کی طرف پیشرفت ثابت ہوگا اب امریکہ نے افغانستان میں اتحادی فوجوں کے انخلا ء کا فیصلہ کیاہے وہ انتہائی دانش مندانہ اقڈام ہے افغانستان میں جب سے اتحادی فوجوں نے آگ اور خون کا کھیل کھیلا ہے اس سے پاکستان سب سے زیادہ متاثرہواہے جب تک افغانستان میں امن قائم نہیں ہوتا پاکستان میں پائیدار امن ممکن ہی نہیں ہے۔ چونکہ کچھ دہشت گرد، کچھ بھارتی اسرائیلی جاسوس اور کچھ انتہاپسند افغانستان کی صورت ِ حال سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنے مذموم عزائم کا نشانہ پاکستان بنارہے ہیں اسلام میانہ روی کا حکم دیتاہے لیکن اسلام کے نام پر اپنے کلمہ گو بھائیوں کے گلے کاٹنا، اسلام کے نام پر دہشت،خوف وہراس ، دین کے نام پر بم دھماکے،خودکش حملے،اسلام کے نام پر مختلف مذاہب کی عبادت گاہوں کو نشانہ بنانا،ٹرینوں پر حملے اور بے گناہوں کے خون کی ہولی کھیلنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ دنیا بھر میں بسنے والے پاکستانیوں کے دل سے آہوں کی صورت میں یہ دعا نکلتی کہ خداکرے مملکت ِ خدا داد میں مستقل امن اور سکون کا دور دورہ ہو۔ اسلام کے نام دوسروں کے گلے کاٹنا انتہائی قابل ِ مذمت فعل ہے اسلام نے تو ایک انسان کے قتل کو پوری انسانیت کا قتل قراردیا ہے ۔ سلامتی کے مذہب نے جانوروں سے بھی صلہ رحمی کا درس دیاہے انتہا پسند اپنے رویہ پر نظرثانی کریں پاکستان میں امن کا قیام ہی ہم سب کے بہترین مفاد میں ہے۔ ملک کے شمالی علاقہ جات میں جہاں انتہاپسندوں کا اثرورسوخ زیادہ تھا ان میں عام آدمی کی حالت انتہائی قابل ِ رحم ہے وہاں نہ کوئی انڈسٹری ہے نہ صنعت۔۔۔ایک سیاحت وہاں کا واحد ذریعہ ٔ روزگار تھا جو دہشت گردی کی نذر ہو گیا۔ شمالی علاقہ جات کے شہری ان حالات کی وجہ سے زندگی سے عاجزآئے ہوئے ہیں اس لئے حکومت ان علاقوں کی ترقی کیلئے ٹھوس منصوبہ بندی کرنا ہوگی۔’یہ بھی کہا جارہا ہے کہ بھی کہا جارہاہے کہ پاکستان میں طالبان کی آڑ میں غیر ملکی طاقتیں دہشت گردی میں ملوث ہیں ان کا مقصد اور خواہش ہے کہ پاکستان ہمیشہ اپنے داخلی اور خارجی مسائل میں الجھارہے تاکہ بر ِصغیر میں امریکہ اور بھارت کی مناپلی قائم رہے کمزور اور سیاسی و معاشی لحاظ سے عدم استحکام سے دوچار پاکستان ہر لحاظ سے عالمی طاقتوں کے فائدے میں ہے ۔۔۔ اپریشن ردالفساد‘‘ میں پاکستانی قوم کی تمام تر ہمدردیاں اور دعائیں اپنی بہادر افواج کے ساتھ ہیں اﷲ کرے پاکستان سے دہشت گردی کا ناسور ہمیشہ کیلئے ختم ہو جائے اور ایک پائیدار امن کا قیام ہمارا مقدر بن جائے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ دہشت گرداسلام ، پاکستان،جمہوریت اور ترقی کے دشمن ہیں ان سے ملک دشمنوں جیسا سلوک کیا جائے اور اپریشن ردالفساد‘‘ کو ہر صورت اس کے منطقی انجام تک پہنچایا جائے حکومتی رٹ کو چیلنج کرنے والوں کو سختی سے کچل دیا جائے۔ اس کے ساتھ ساتھ حکومت کا فرض بنتاہے کہ دہشت گردی اور انتہا پسندی سے تائب ہونے والوں کی جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے اور ان کو پر امن زندگی گذارنے کیلئے مراعات دی جائیں۔ اور جلدازجلد امریکہ طالبان مذاکرات شروع کئے جائیں اور انکو منطقی انجام تک پہچاکراتحادی فوجیں افغانستان سے باعزت واپس چلی جائیں اس کے بغیرخطے میں پائیدار امن کا واب شرمندہ ٔ تعبیرنہیں ہوسکتا۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Sarwar Siddiqui

Read More Articles by Sarwar Siddiqui: 256 Articles with 79478 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
02 Aug, 2019 Views: 288

Comments

آپ کی رائے