سلاجیت

(Hakeem Zia-Ur-Rehman Sandhu, lahore)
السلام علیکم
سلاجیت یہ ایک گوند ہے جو پہاڈوں سے نکلتی ہے سلاجیت کے معنی پتھر کی جان ہے یہ ایک سیاہ رنگ کا مادہ ہے جس میں‌سے گائے کے پیشاب جیسی بو آتی ہے ۔۔ بعض پہاڈوں مہں گرمی کی شدت کے باعث درزوں کے اندر سے ایک قسم کی لاکھ یاں گوند کی طرح کا مادہ جم جاتا ہے ۔۔ یہ مادہ پہاڈ کی درزوں میں از خود بنتا ہے

من گھڑت باتیں‌
سلاجیت کے متعلق کہا جاتا ہے کہ یہ پہاڑی بکرے کا پیشاب ہے جو ایک جگہ پڑا رہ کر گاڑھا اور سیاہ ہو جاتا ہے اور بعض کے نزدیک یہ پہاڑی گدھے کا پیشاب ہے

اصل بات
اصل بات یہ ہے کہ یہ ایک ٹھوس مادہ ہے جس میں نامیاتی اجزاء ۔ نباتی ریشے اور ارضی اجزاء پائے جاتے ہیں‌ سلاجیت ایسے پہاڑوں‌ سے نکلتی جن میں‌سونے ۔چاندی ۔تانبے۔ سیسہ ذنگ اور لوہے کی کانیں‌ ہوتی ہیں‌
اس لئیے اسکا رنگ مختلف ہوتا ہے -

ذائقہ
اس کا ذائقہ تلخ ہوتا ہے :

شناخت
اس کے اصل اور نقل ہونے کی شناخت کا طریقہ یہ بتایا جاتا ہے کہ سلاجیت کو پانی میں بھگودیں اور انگلی سے رگڑ کر اٹھائیں‌اگر تار جیسے ریشے نکلیں تو اصلی ہے اگر سلاجیت پانی میں حل ہونا شروع ہو جائے تو نقلی ہے

صاف کرنا ‌
سلاجیت پتھروں کی درزوں میں سے نکل کر جم جاتی ہے اس کو کھرچ لیا جاتا ہے مگر یہ صاف نہیں‌ہوتی ااس کو صاف کرنے کے لئیے اس کو گرم پانی میں کوئی 6 سے 7 کھنٹے تک بھگو دیتے ہیں‌اس کے بعد باریک کپڑے سے فلٹر کریں‌ فلٹر کیے ہوئے پانی کع دھوپ میں رکھ دیں اس کے اوپر بالائی آئے گی اس کو اتار لیں اور جب تک بالائی آتی رہے اتارتے رہیں‌ یہی صاف سلاجیت ہے -

فائدے
اس کے متعلق کہا جاتا ہے کہ یہ ہر مرض کے لئیے مفید ہے اعصابی امراض میں بکثرت اسکا استعمال ہوتا ہے -

اعصاب کو طاقت دیتی ہے مردانہ امراض کے علاوہ عورتوں کے امراض پوشیدہ میں‌ بھی مفید ہے-
بعض دوائیں زوالخاصہ ہوتی ہیں ان میں سلاجیت بھی شامل ہے
زوالخاصہ
اس سے مراد ہے کہ بیک وقت دو متضاد امراض میں فائدہ دیتی ہیں اگرچہ سلاجیت پیشاب آور ہے مگر اس کو سلسل البول (بار بار پیشاب آنا ( میں استعمال کیا گائے تو پیشاب کی ذیادتی کو روک کر مثانہ کا قوئی کرتی ہے -
سردیوں میں اس کی معمولی سی مقدار کھانے سے سردی کے احساس کو ختم کرتی ہے
مقدار خوراک
4 رتی سے 1 ماشہ
مزاج
گرم 2 درجہ میں خشک 2 درجہ میں
Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 3112 Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Hakeem Zia Sandhu

Read More Articles by Hakeem Zia Sandhu: 16 Articles with 30349 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Comments

آپ کی رائے
Language:    
search this page : Salajeet