بڑے پیمانے پر ملازمت پیشہ افراد بے روزگار ہوگئے

کراچی(قومی اخبار نیوز )ملک میں معاشی سست روی اور فروخت میں کمی کے سبب بڑے پیمانے پر ملازمت پیشہ افراد روزگار سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

 

صرف آٹو سیکٹر سے 10 ہزار کے قریب پروفیشنلز کو روزگار سے ہاتھ دھونا پڑا جبکہ مختلف پارٹس بنانے والی کمپنیوں نے فیکٹریوں کو 3 شفٹوں سے 2 اور 2 سے ایک پر منتقل کر دیا ہے۔کمپنیوں سے ختم کی گئی شفٹوں سے نوکری پیشہ افراد کو ملازمت سے ہاتھ دھونے پڑے ہیں اور کار بنانے والی بڑی کمپنیوں نے مہینے میں 8 سے 20 دن پروڈکشن روکی ہوئی ہے۔آٹو پارٹس ایسوسی ایشن کے سابق چیئرمین منیر بانا کے مطابق ان کا اندازہ ہے کہ 10 سے 15 ہزار افراد کو نوکریوں سے نکالا جا چکا ہے۔انہوں نے کہا کہ ٹیکسوں کا دباؤ بھی آٹو سیکٹر کی فروخت پر اثر انداز ہو رہا ہے، کار سازی کے کاروبار سے منسلک کمپنیاں دیگر کے مقابلے میں کم منافع کماتی ہیں۔خیال رہے کہ گزشتہ دنوں اسٹیٹ بینک کے گورنر رضا باقر نے اعتراف کیا تھا کہ پاکستان کی معاشی شرح نمو سست روی کا شکار ہے اور معاشی سست روی کے باعث معیشت کیلئے خدشات پیدا ہو رہے ہیں۔وفاقی ادارہ شماریات نے جنوری 2019 میں لیبرفورس سروے رپورٹ 18-2017 جاری کی تھی جس کے مطابق پاکستان میں بے روزگار افراد کی تعداد میں ایک لاکھ 70 ہزار کا اضافہ ہوا ہیجس کے بعد بے روزگار افراد کی تعداد بڑھ کر 37 لاکھ 90 ہزار ہوگئی ہے۔ اب موجودہ ملکی معاشی سست روی کے باعث بے روزگاری میں اضافے کا امکان ہے اور بے روزگار افراد کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.