اعترافِ نسبت
Poet: Syed Zulfiqar Haider
By: Syed Zulfiqar Haider, Nizwa, Oman

جُستجو ءِ پیار میں کھوےَ ہیں ہم
تمنا ءِ یار سینچے روےَ ہیں ہم
شب بھر سلگتی آگ میں جلتے ہیں
دیوانگی میں ایسے اُن سے منسوب ہوےَ ہیں ہم

عشق میں حصولِ یار حسرت سا لگنے لگا
کشمکش ایسی کبھی مایوس تو کبھی پُر اُمید
سلسلہ یہ ایسا کہ سمجھ سے قاصر ہوا پڑا
وصلِ یار میں ایسے دنیا سے بیگانے ہوےَ ہیں ہم

اک ناطہ بناےَ ہیں وہ بے خبر اس حقیقت سے
ملن کی آس میں رہنا اُنکی جھلک کو ترسنا
میرے ہونے نا ہونے سے بے پروا میرا محبوب
پیامِ محبت ہاتھ میں تھامے پھر بھی کھڑے ہوےَ ہیں ہم

کبھی جو ا جاےَ کسی بہانے سے ہمارے دیس
حجر کی سوغات اُنکے آ جانے سے تھم جاےَ
ہم سے گفتگو ہو ایسی اپنی قسمت کہاں
اُن کے آنے کی خواہش میں سانسوں سے ربط جوڑے ہوےَ ہیں ہم
 

Rate it: Views: 3 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 06 Sep, 2018
About the Author: Syed Zulfiqar Haider

Visit Other Poetries by Syed Zulfiqar Haider »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
well said
By: Zahid, Sialkot on Sep, 08 2018
Reply Reply to this Comment
Kiya khobsorat aitraf
By: Mahmood, Sheikhupura on Sep, 08 2018
Reply Reply to this Comment
Submission
By: Minal, Hyderabad on Sep, 08 2018
Reply Reply to this Comment
Appreciable
By: Sultan, Lahore on Sep, 08 2018
Reply Reply to this Comment
khobsorat
By: Aleeha, Multan on Sep, 07 2018
Reply Reply to this Comment
Super
By: Ayisha, Sargodha on Sep, 07 2018
Reply Reply to this Comment
Super
By: Ayisha, sa on Sep, 07 2018
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.