فریڈم فائٹرز

(Ghani Mehmood Kasuri, Kasur)
مسلمان کی جدوجہد آزادی کیسے جاری رہتی ہے
#قصوریات

برہان مظفر سے برہان مظفر شہید تک
..
22سال کی عمر یعنی دو صرف عشروں کی عمر میں میرا برھان مظفر وانی دس لاکھ فوج کو ایسا زخم دے گیا کہ 70 سال یعنی سات عشروں میں ایسا زخم بھارت کو نا ملا تھا 22 سالہ لڑکا وہ کام کرگیا کہ 50 ,50 سال سے عسکری خدمات دینے والے ہندوں,اسرائیلی دماغ دنگ رہ گئے ایسا کیوں ہے ¿ ایسا اس لئے ہے کہ برہان مظفر وانی اس محمد ذیشان تاجدار ختم نبوت صلی اللہ علیہ وسلم کا روحانی فرزند ہے اور اس لئے بھی ہے کہ وہ سیدنا صدیق اکبر,سیدنا عمر فاروق ,سیدنا عثمان غنی ,سیدنا علی المرتضی شیر خدا رضوان اللہ علیہ اجمعین کا روحانی فرزند ہے اور ایسا اس لئے ہے کہ وہ سیدنا امیر معاویہ کا روحانی فرزند ہے کہ جس نے مجوسیت کو جڑ سے اکھاڑ پینکااور وہ اس سلطان صلاح الدین ایوبی کہ جس نے صلیبیوں سے بیت اللہ واپس لیا کا روحانی فرزند ہے اور اس 17 سالہ محمد بن قاسم کا روحانی بیٹا ہے جس نے راجہ داہر کو چھٹی کا دودھ یاد کروایا تھا اور وہ اس محمود غزنوی کا روحانی بیٹا ہے کہ جس کی یلغار سے کئی لاکھ ہندوں مسلمان ہو گئے تھا اور وہ اسی ٹیپو سلطان کا روحانی فرزند ہے کہ جس نے انگریز کو ایسی ہیبت ناک ضرب لگائی کہ اس شیر کو گولیاں مار کر بھی کئی گھنٹے کسی کو اس شیر کے جسد مبارک کے قریب جانے کی جرأت نا ہوئی تھی اور انڈیا کیوں نا روئےکہ وہ اسی شاہ اسماعیل کا روحانی فرزند ہے کہ جس کے نام سے انگریز کے ایوانوں میں زلزلے برپا ہوجاتے تھے میرے اور برہان مظر وانی کے اسلاف کی تاریخ اتنی زیادہ ہے کہ میں اگر لکھنے بیٹھوں تو میری عمر لکھتے لکھتے ختم ہو جائے آج اسی لئے انڈیا دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کا دعویدار برہان کی برسی سے ڈر رہا ہے کہ کل کوئی اور برہان اپنے اسلاف کی تاریخ نا دہرا دے سن لے انڈیا برہان تو رب کی جنتوں کا مہمان بن گیا مگر اللہ کی قسم اپنے پیچھے آنے والی نسلوں کو وہ ایسا سبق سکھا گیا کہ قیامت تک ہندو دھرم میں خوف کی لہر پیدا کر گیا اور سن لے کہ کشمیر پر تیرا قبضہ اب زیادہ دیر قائم نا رہ سکے گا اور تیرا قبضہ ویسے بھی عملا ختم ہی ہے کیونکہ ایک طرف مٹھی بھر مجاہد اور ایک طرف تیری دس لاکھ فوج کئی سالوں سے میرے غیور کشمیروں کی آواز آزادی کو دبا نا سکی بلکہ اس آواز صداء آزادی کو مسلح جدوجہد یعنی جہاد میں بدل دیا اور سن لے انڈیا تیری ہندوں مائیں غم سے مر جاتی ہیں کہ جب ان کو پتہ چلتا ہے میرے فوجی بیٹے کی مقبوضہ کشمیر میں پوسٹنگ ہو گئی ہے اور جب کہ دوسری طرف کسی ماں کا ایک بیٹا شہید ہوتا ہے تو وہ ماں پہلے بیٹے کی کلاشن دوسرے بیٹے کو پکڑا کر کہتی ہے چل بیٹا اپنے رب کے فرمان کے مطابق اپنے شہید بھائی کا بدلہ لے اور مظلوم ماؤں, بہنوں,بیٹیوں اور بزرگوں کی مدد کر اور پھر اس کی شہادت کے بعد تیسرے پھر چھوتھے حتی کہ بیٹے کے بیٹے کو کلاشن پکڑا کر حکم ربی سنا کر کلاشن پکڑا کر خود غاصب پلید ناپاک ہندوں فوج کے خلاف جہاد کے لئے بیجھا جاتا ہےاور بعض اوقات تو بیک وقت دو,دو بھائی اور کئی مرتبہ باپ بیٹا اکھٹے برسر پیکار ہیں اور کئی سالوں سے یہ سلسلہ جاری ہےاور اس سے بھی بڑھ کر ذلت آمیزی تجھے تب ملی جب میری عفت مأب پاک دامن میری کشمیری بہنوں بیٹیوں نے اپنے غیور سنگ باز بھائیوں کے شانہ بشانہ تیری گندی فوج کا مقابلہ پتھروں سے شروع کیا اور ان شاءاللہ یہ جدوجہد کشمیر کی آزادی تک جاری رہیگی ان شاءاللہ اور تیری واضع شکشت کا بہت بڑا ثبوت ہر روز تیرے فوجیوں کی خود کشی کرنا ہے انڈیا اب بھی وقت ہے کشمیر سے نکل جا ورنہ یاد کر ہمارے روحانی باپ, محمد بن قاسم نے تیرے ہند پر حملہ کر کے پاکستان کی بنیاد رکھی تھی اور آج اسی محمد بن قاسم کے روحانی بیٹے اپنے اسلاف کی قربانیوں کو دھراتے ہوئے تیرے ہند سے کئی پاکستان نکالیں گے کیونکہ یہ جنگ کفر و اسلام کی جنگ ہے اور کفر اسلام کے درمیان فرق لا الہ الا اللہ کا ہے اور ہم پوری امت مسلمہ کا آپس میں رشتہ بھی اسی لا الہ الا اللہ کا ہے ان شاءاللہ یہ رشتہ قائم ہے اور رہیگا
ازقلم.غنی محمود قصوری
#قصوریات
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Ghani Mehmood Kasuri
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
03 Mar, 2018 Views: 362

Comments

آپ کی رائے