آنسو کے متعلق دلچسپ معلومات

(DR ZAHOOR AHMED DANISH, Karachi)
آنکھیں اﷲ عزوجل کی بہت بڑی نعمت ہیں ۔وہ آلہ جس سے اس دنیا کی رونقوں کو ہم ملاحظہ کرتے ہیں ۔انہی آنکھوں سے ماں باپ کی زیارت،انہی آنکھوں سے بیت اﷲ کے جلوے،انہی آنکھوں سے روضہ رسول صلی اﷲ علیہ وآلہ وسلم کی زیارت ۔آہ !کیا بتائیں !کتنی بڑی نعمت ہے ۔جو اس نعمت سے محروم ہے اس سے پوچھیے یہ کتنی بڑی نعمت ہے ۔کیا اہمیت ہے ان دیدوں کی ۔ان آنکھوں کی ۔

محترم قارئین :آج ہم اسی آنکھ سے ٹپکنے والے آنسوؤں کے متعلق آپ کو دلچسپ معلومات بتائیں گے ۔آنسوؤں تو ہر آنکھ سے ٹپکتا ہے۔ کسی آنکھ سے غم کی وجہ سے، کسی آنکھ سے خوشی کے آنسو تو کسی آنکھ سے خوف خدا، کسی آنکھ سے یاد مصطفٰی میں سیل اشک رواں ہوجاتے ہیں۔
تو سنیے قدرت کے عطاکردہ اس آنسوکے بارے میں :

آنسو ، اشکی غدود(Lacrimal Glands)کی رطوبت ہیں۔ یہ آنکھ کے ڈھیلے (Eyeball)کی شفاف بیرونی تہ یا جھلی، قرنیہ( (Cornea)کو مسلسل دھوتے رہتے ہیں ۔ یہ اس پر موجود بیرونی ذرات مثلاً گرد یا بال وغیرہ مسلسل صاف کرتے رہتے ہیں۔ آنسو، قرنیہ کو خشک ہونے سے بھی بچاتے ہیں۔ قرنیہ کے خشک ہونے کا نتیجہ اندھے پن کی صورت میں نکل سکتا ہے۔ ہر آنکھ میں، آنکھ کے پپوٹے (Eyelid) کے پیچھے ایک اشکی غدود موجود ہوتا ہے.

یہ آنکھ کے پپوٹے کے نیچے موجود چھوٹی چھوٹی نالیوں کے ذریعے اپنا مائع خارج کرتے ہیں۔ ہر بار آنکھ جھپکانے کی صورت میں اشکی غدود سے مائع ان نالیوں میں پہنچ جاتا ہے۔ جب کوئی شخص شدید جذبات ، جیسا کہ غم یا غصے کے زیراثر ہوتا ہے تو اشکی غدود کے گرد موجود عضلات تن جاتے ہیں اور آنسو خارج ہونے لگتے ہیں۔ دل کھول کر ہنسنے کی صورت میں بھی یہی عمل وقوع پذیر ہوتا ہے۔ آنکھ کے ڈھیلوں پر سے گزرنے اور انہیں دھونے کے بعد، آنسو آنکھ کے اندرونی حصے میں موجود اشکی نالیوں (Lacrimal Ducts) سے باہر چہرے پر بہنے لگتے ہیں۔

حقائق:بیشتر نمکیات محلول پر مشتمل آنسوؤں میں بیکٹیریا کے خلاف مدافعت کرنے والے مادے بھی پائے جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ ان میں پروٹین ہوتی ہے، جو آنکھوں کو مختلف بیماریوں سے محفوظ رکھتی ہے ۔

طبی ماہرین کے مطابق آنسوؤں می ایک بیکٹریایا ایسا مادہ ہوتا ہے جو ہمارے اعصابی نظام کو کسی بڑے انتشار سے بچانے کی کوشش کرتا ہے۔ انسان کو جب کوئی شدید صدمہ پہنچتا ہے تو اس کے جسم میں دو قسم کے ہارمونز بڑی مقدار میں پیدا ہوتے ہیں۔ جنھیں strees hormons کا نام دیا جاتا ہے۔ یہ ہارمونز ہمیں رونے پر آمادہ کرتے ہیں اور مشکل وقت میں اعصابی نظام کو کسی بڑے خطرے کا شکار ہونے سے بچانے کے لیے انسان رو دیتا ہے اور دراصل آنسو ہمارے جسم کو نقصان دہ عناصر سے محفوظ رکھتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق آنسو بلڈ پریشر کو نارمل رکھتے ہیں۔ اور ذہنی دباؤ کو کم کرنے کے ساتھ اگر جلد پر چھوٹی موٹی خراشیں پڑ جائیں تو آنسو کا پانی چہرے کو شاداب کردیتا ہے۔ ماہرین نفسیات کے مطابق آنسو کا روکنا کسی طور پر ٹھیک نہیں۔ جسم میں دباؤ پیدا کرنے عوامل کو آنسو بہا کر لے جاتے ہیں۔ آپ نے دیکھا ہوگا آنسو بہانے کے بعد کچھ بوجھ ہلکا محسوس ہوتا ہے۔ انسان اپنے آپ کو قدرے مطمئن محسوس کرتا ہے۔ جیسا کہ ندامت کے آنسو ہی کی مثال لے لیں ۔

میرے بھی آنسو نکل رہے ہیں۔ پوچھیں وہ کیوں؟ وہ اسلیے کہ میں چادر اور چار دیواری میں ملکہ کو سربازار نیلام ہوتے دیکھ رہا ہوں۔ حیا کی چادر کو تار تار دیکھ رہا ہوں۔ بہن بیٹی کو بے باک اور سرکش دیکھ رہا ہوں ۔اس کی اصلاح بے حد ضروری ہے۔ لیکن ۔۔۔۔۔ایک درد اور خالصتا ً رضائے الہی کے لیے بہن بیٹیوں کوبا شعور اور آگاہی کے لیے ایک ادارہ بنام فاطمۃ الزہراء اسلامک اکیڈمی کی بنیاد رکھی ہے۔ جہاں جدید عصری تقاضوں کے مطابق انھیں نصابی تعلیم کے ساتھ ساتھ عصری تقاضوں سے ہم آہنگ ہونے کے ساتھ ملک و ملت کا مثبت شہری بنانے کی بھرپور سعی جاری رکھیں گے۔ اس ادارے کو تکمیل کے مراحل تک پہنچانے کے لیے آپ دوستوں کا مالی تعاون درکار ہے۔ میں پرامید ہوں کے امی فاطمۃ رضی اﷲ عنھا کے نام سے شروع ہونے والی اس اکیڈمی کے لیے آپ اپنے حصّے کو یقینی بنائیں گے۔ اﷲ عزوجل ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔۔
رابطہ نمبر:0346-2914283
برج بینک سی بی برار برانچ دھوراجی کراچی : اکاونٹ نمبر:0008135860001702
 
Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 2405 Print Article Print
About the Author: DR ZAHOOR AHMED DANISH

Read More Articles by DR ZAHOOR AHMED DANISH: 230 Articles with 218618 views »
i am scholar.serve the humainbeing... View More

Reviews & Comments

السلام و علیکم :
ڈاکٹر صاحب آپ نے بہت اچھا کام کیا ہے اللہ عزوجل آپ کو اس مشن میں کامیابی عطا فرمائیں اور یہ ہماری اسلامی بہنوں کے لئے بہت ضروری ہے اس اکیڈمی میں داخلہ لینے کی ۔۔۔۔اور مجھ سے جتنا ممکن ہوا میں آپ کی بھر پور مدد کرو گا ان شاءاللہ عزوجل۔۔۔۔۔۔۔۔
By: Ejaz Qurashi, Karachi on Mar, 28 2016
Reply Reply
1 Like
boht shukria ejaz sahb
By: DR ZAHOOR AHMED DANISH, karachi on Mar, 29 2016
0 Like
jazkallah mery walid ar wilda k liye dowa ki iltaja hai
By: abdul wahab, karachi on Mar, 28 2016
Reply Reply
0 Like
mashAllah d.r sab ap ki tehrer por taseer par kar malomat min izafa howa Allah ap ko is ki dehron barkaten ata frmay ameen Allah ap ko sehat o tandrosti ata frmay ameen uorat k liye denni taleem ka hona nihayat zarori hai q k min ne parha tha k agar mard deen dar ho to samjho deen gahr ki dehleez min dakhil ho gaya ar agar uorat deen dar ho to deen naslon tak pohanc gaya aj ahamare behn k pas dunya ki taleem to magar wo deen sy kahli hai Allah ap ki kawishon ko apni bargah min maqbool farmay araz ye karni hai agar koi is deeni kam min min apni istatat k mutabiq koc deena caho tyo ap apna acont no ata frmay deen mera dena Allah apni bargah min qabool frmay ameen
By: abdul wahab, karachi on Mar, 28 2016
Reply Reply
0 Like
Language: