سا تھی زندگی کے

(mini, mindi bhauddin)
آج کیا ہوا،،، بہت اداس لگ رھے ہو؟ ثانیہ نے اسے دیکھتے ہوئےپوچھا کچھ نہیں،، معیز صاف ٹال گیا بتاؤ تو سہی! کیوں دسمبر کی اداس شام کا حصہ بنے ہو،، ثانیہ کے لہجے میں ہنسی شامل تھی کیا بتاؤ،، تھک گیا ہو اب،،، معیز نے کہا زندگی کے دشوار رستوں میں چلتے چلتے اکتا گیا ہو،،،،، اب اور چلنے کا حو صلہ نہیں مجھ میں،،،، معیز نے کہا،اور اٹھ کر جانے لگا،،، ثانیہ نے آگے بڑھ کر معیز کا ہاتھ تھام لیا تمہارا حوصلہ ختم ہو گیا تو کیا،، میرا تو ابھی باقی ہے نا ثانیہ نے کہا،،دونوں مسکرا دئیے،،،
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: mini

Read More Articles by mini: 57 Articles with 35399 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
10 Dec, 2016 Views: 417

Comments

آپ کی رائے
nice
By: umama khan, kohat on Dec, 11 2016
Reply Reply
0 Like
thanks
By: mini, mindi bhauddin on Dec, 11 2016
0 Like
ok thanks for advice
By: mini, mindi bhauddin on Dec, 10 2016
Reply Reply
0 Like
have complete view and portray situation,,try hard ,,,,dont take things easy,,,,,,,,,,take reader with you just like holding some one finger
By: HuKhan, Karachi on Dec, 10 2016
Reply Reply
0 Like
nice ye kia tha samjh nahi ai :)
By: Zeena, Lahore on Dec, 10 2016
Reply Reply
0 Like
zeena sis smjh nhi aya tu nice qn kha
By: mini, mindi bhauddin on Dec, 10 2016
0 Like