ایک مظلومہ کی فریاد

(Ilyas Katchi, Karachi)
بسم اﷲ الرحمن الرحیم

مجھے تقریبا پون صدی ہوئے اس ملک میں رہتے ہوئے، میں ابھی تک اپنے جائز حق سے محروم ہوں۔ یہاں کے رہنے والوں نے مجھ پر بہت ظلم کیا۔میں آزادی کی علامت ہوں،لیکن انہیں تو غلامی ہی پسند ہے۔ مجھے اپناتے ہوئے شرماتے ہیں۔اب تو میرے حلیے سے بھی نفرت ہو چلی ہے، مجھے استعمال بھی کرتے ہیں تو غلامی کا طوق ڈال کر ۔جب اپنوں نے مجھے ایسا بے عزت کیاتو پھر غیروں سے کیا توقع ؟

مجھے بڑی شرمندگی ہوتی ہے جب غیر اپنا اسمارٹ فون میرے ملک میں بیچ کر خوب نفع کماتے ہیں لیکن طویل فہرست میں میرے لئے کوئی گنجائش نہیں رکھتے ، اپنوں نے یہ حال کیا تو غیروں کو یہ جرات ہوئی۔اتنے ظلم کے باوجود ، پاکستانیوں!میں پھر بھی تمھاری خیر خواہ ہوں اور مشورہ دیتی ہوں کہ اگر ترقی کرنا ہے اور آزادی کی لذت سے لطف اندوز ہونا ہے تو مجھے میرے حلیے ہی میں اپنا لو۔ میری فریادپر توجہ دو۔

والسلام
x app ki apni
آپ کی اپنی قومی زبان۔۔۔۔اردو
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Ilyas Katchi

Read More Articles by Ilyas Katchi: 39 Articles with 21733 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
25 Jan, 2017 Views: 470

Comments

آپ کی رائے