خیبرپختونخواہ کا 900 ارب روپے کا بجٹ پیش

خیبرپختونخواہ کا 900 ارب روپے کا بجٹ پیشپشاور: (18 جون 2019) خیبرپختونخواہ کا 900 ارب روپے کا بجٹ پیش کردیا گیا۔ ضم شدہ اضلاع کیلئے 162ارب، جبکہ دیگر اضلاع کیلئے 693 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔

پشاور اسمبلی کا بجٹ اجلاس اسپیکر مشتاق غنی کی صدارت میں ہوا۔ اجلاس میں بجٹ برائے سال 2019-20 کا 900 ارب کا بجٹ پیش کیا گیا۔ بجٹ میں 162 ارب روپے ضم شدہ قبائلی اضلاع، جبکہ 693 ارب روپے باقی دیگر اضلاع کیلئے تجویزکیے گئے ہیں۔ صوبے میں ریٹائرمنٹ عمر کی حد 63 سال تک بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا جس سے سالانہ 20 ارب بچت ہوگی۔ کم ازکم ماہانہ اجرت کو 15 ہزار روپے سے بڑھا کر 17 ہزار 500 روپے کی گئی ہے۔

صوبائی وزیر خزانہ تیمور سلیم نے بجٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ترقیاتی فنڈز کا حجم بڑھایا ہے۔ صوبے کے ترقیاتی بجٹ کا حجم 319 ارب روپے تجویز ہے، جبکہ رواں سال کا ترقیاتی بجٹ پنجاب سے صرف 31 ارب روپے کم اور سندھ سے 34ارب زیادہ ہے۔ عوام کو پینے کا صاف پانی، سڑک، صحت اور تعلیم کی سہوالیات دینی ہیں۔ خیبرپختونخواہ میں ریکارڈ نوکریاں پیدا کریں گے۔

بجٹ برائے 2019-20 میں گریڈ 20 سے 22 تک سرکاری ملازمین کی تنخواہ میں کوئی اضافہ نہیں کیا گیا، جبکہ گریڈ 17 سے گریڈ 19 تک تنخواہ میں 5 فیصد اضافے کی تجویز ہے۔۔ صوبے میں اس سال 53.4 ارب روپے محاصل اکھٹا کرنے کا ٹارگٹ رکھا گیا ہے۔ 2023ء تک اس کو 100 ارب روپے تک بڑھایا جائے گا۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.