شاہ محمود قریشی: عمران خان کی امریکی صدر ٹرمپ سے ملاقات میں کشمیر کا معاملہ سرفہرست ہو گا

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے امریکہ میں مقیم کشمیریوں کے نمائندہ وفد سے ملاقات کرتے ہوئے یقین دلایا ہے کہ وہ ہر سطح پر انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں بسنے والے افراد کے لیے آواز بلند گریں گے۔

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے امریکہ میں مقیم کشمیریوں کے نمائندہ وفد سے ملاقات کرتے ہوئے یقین دلایا ہے کہ وہ ہر سطح پر انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں بسنے والے افراد کے لیے آواز بلند کریں گے۔

ان کا وفد سے ملاقات میں کہنا تھا کہ 'میں آپ کا پوری دنیا میں سفیر بنوں گا۔'

واضح رہے کہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان ان دنوں امریکہ کے دورے پر ہیں جہاں وہ 23 ستمبر کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کریں گے اور 27 ستمبر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کریں گے۔

نیویارک میں کشمیری رہنماؤں کے وفد سے ہونے والی ملاقات میں ڈاکٹر غلام نبی فائی، ڈاکٹر غلام میر، ڈاکٹر خالد قاضی ، امتیاز خان، عبدالروف میر، سردار سرور خان اور دیگر رہنما شامل تھے۔

کشمیری رہنماؤں کے وفد نے پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کو انڈیا کی جانب سے اپنے زیر انتظام کشمیر کی آئینی حیثیت ختم کرنے کے بعد سے عائد پابندیوں کے باعث وہاں کی صورتحال کے بارے میں آگاہ کیا۔

کشمیری رہنماؤں کے وفد نے انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے پر پاکستانی وزیر اعظم کا شکریہ ادا کیا۔

یہ بھی پڑھیے

’انڈیا کشمیر سے توجہ ہٹانے کے لیے جعلی آپریشن کر سکتا ہے‘

صورہ میں احتجاج ہوا، انڈیا کی حکومت کا اعتراف

عمران خان: ’ہم مودی کو اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے‘

پاکستان، کشمیر اور خام خیالی

اس وفد میں ان کشمیری شہریوں کے قریبی رشتہ دار بھی موجود تھے جو اس وقت انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں زیر حراست ہیں یا جن سے کوئی رابطہ نہیں ہو پا رہا۔

اس موقع پر پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کشمیری رہنماؤں کے وفد کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کشمیریوں کی آواز بن کر، سفیر بن کر ان کا مقدمہ لڑنے آئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں لوگوں کو جتنا دبایا جا رہا ہے اتنے ہی ان کےحوصلے مضبوط ہو رہے ہیں۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے وزیراعظم عمران خان کی ملاقات میں مسئلہ کشمیر سرفہرست ہو گا۔

پاکستانی وزیر خارجہ نے بتایا کہ وزیراعظم عمران خان سے دو ایسے کشمیری رہنماؤں نے بھی ملاقات کی ہے جنھوں نے45 روز محاصرے میں گزارے ہیں۔

انھوں نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ وہ انڈیا کے زیر انتظامکشمیر میں مبصرین بھیجے تاکہ صورتحال اور حقائق دنیا کے سامنے آسکیں۔ پریس کانفرنس کے دوران پاکستانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ انڈیا نے کشمیریوں کے حوصلوں کو پست کرنے کے لیے پابندیاں عائد کر رکھی ہیں۔

انھوں نے انڈیا پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ جو دنیا کو بتا رہا ہے کہ اس کے زیر انتظام کشمیر میں صورتحال معمول پر آ رہی ہے وہ سراسر غلط ہے۔

EPA

ان کا کہنا تھا کہ انڈیا کے زیر انتظام کشمیر اس وقت دنیا کی سب سے بڑی جیل بن چکا ہے۔

' وادی میں سکول بند ہیں، خالی سکول بسیں سڑکوں پر نظر آ رہی ہیں۔'

پاکستانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ انڈیا نے اپنے زیر انتظام کشمیر میں خوف کا ماحول پیدا کیا ہے اور وادی میں اب بھی سکول، ٹرانسپورٹ اورمواصلاحات کے ذرائع معطل ہیں۔

انھوں نے انڈیا کے وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مودی کہہ رہے ہیں کہ وادی کشمیر میں حالات معمول پر آ گئے ہیں یہ دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں ٹرانسپورٹ کی بندش کی وجہ سے مریضوں کواسپتال لے جانے میں مشکلات کا سامنا ہے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کو ڈھائی صفحات پرمشتمل خط لکھا ہے اور متعلقہ حکام سے درخواست کی ہے کہ یہ خط اقوام متحدہ کے رکن ممالک میں تقسیم کیا جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ خواہش ہے کہ پاکستانی وزیراعظم کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب سے قبل تمام سربراہان مملکت پاکستان کے نقطہ نظر سے آگاہ ہوں۔

اس موقع پر کشمیری رہنماؤں کے وفد کے رکن غلام نبی فائی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم پاکستان سے درخواست ہے کہ ٹرمپ کو ان کی کشمیر کے معاملے پر ثالثی کی خواہش یاد دلائیں۔

غلام نبی فائی کا کہنا تھا کہ پاکستان اورانڈیا مسئلہ کشمیر کے لیے اہم فریق ہیں۔

Getty Images

یاد رہے کہ انڈیا کے جانب سے اپنے زیر انتظام کشمیر کی آئینی حیثیت ختم کرنے کے بعد پاکستان اور انڈیا کے درمیان تناؤ کم کرنے کے لیے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کشمیر کے معاملے پر ثالثی کی پیش کش کی تھی۔

کشمیری رہنما غلام نبی فائی کا کہنا تھا کہ انڈیا کے زیر انتظام کشمیر کے ہر کونے میں آر ایس ایس کے تربیت یافتہ لوگ تعینات کیے گئے ہیں۔

جبکہ امریکی شہر ہیوسٹن میں انڈیا کے وزیر اعظم نریندر مودی کے جلسے پر بات کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے دعویٰ کیا کہ جلسے میں گو مودی گو کے نعرے لگ رہے تھے۔

پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے امریکہ میں اپنے دورے کے دوران ایمنسٹی انٹرنیشنل کے سیکریٹری جنرل کومی نائیڈو سے بھی ملاقات کی جس میں پانچ اگست کے بعد سے انڈیا کے زیر انتظامکشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

جبکہ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان سے افغانستان کے لیے امریکہ کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد نے بھی ملاقات کی جس میں افغان امن عمل اور خطے کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن مفاہمت ہونی ہے تو افغان حکومت اور طالبان کو بیٹھ کر معاملات طے کرنا ہوں گے، پاکستان کا آج بھی یہی مؤقف ہے کہ افغان مسئلے کا فوجی حل نہیں ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے افغانستان میں امن عمل کی بحالی کی امید کا اظہار بھی کیا۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.