پاکستان کی پہلی ایچ آئی وی ایڈز ’ہیلپ لائن ایپ‘

واشنگٹن — 

ٹیلی فون کی گھنٹی بجتی ہے ۔۔۔

’’اسلام علیکم۔۔۔یہ ایچ آئی وی ایڈز (ایسوسی ایشن آف پیپلز لیونگ ود ایچ آئی وی) کی ہیلپ لائن ہے ۔۔۔ ہم آپ کی کیا مدد کر سکتے ہیں؟‘‘

فون کی یہ گھنٹی دن میں چالیس پینتالیس بار بجتی ہے۔ ہیلپ لائن پر موجود کونسلرز ایچ آئی وی ایڈز سے متعلق کالرز کے سوالات کے جواب دیتے ہیں یا انھیں مطلوبہ معلومات فرام کرتے ہیں۔

ایسوسی ایشن آف پیپلز لیونگ ود ایچ آئی وی (APLHIV) کے نیشنل کوآرڈی نیٹر، اصغر الیاس ستی نے ’وائس آف امریکہ‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’’ایچ آئی وی ایڈز کے مریضوں کے لیے یہ قومی سطح کی واحد ہیلپ لائن ہے۔ ہم ہفتے کے ساتوں دن اور چوبیس گھنٹے خدمات فراہم کرتے ہیں‘‘۔

کونسلرز کبھی کالرز کو مشورے دینے میں مصروف ہوں تو نئے کالر کو کچھ وقت انتظار کرنا پڑتا ہے۔ اصغر الیاس ستی نے کہا ہے کہ ’’اب کسی کو فون لائن پر انتظار نہیں کرنا پڑے گا۔ آئندہ ہفتے سے ایچ آئی وی ایڈز پاکستان کے نام سے موبائل ایپ لانچ کر رہے ہیں۔ اب کوئی بھی آسانی سے ہم سے رابطہ کر سکتا ہے۔‘‘

اے پی ایل ایچ آئی وی ایک ایسا ادارہ ہے جہاں کام کرنے والے تمام افراد ایچ آئی وی پازیٹو ہیں۔ یہاں انھیں ملازمت اسی بنیاد پر فراہم کی جاتی ہے۔

اصغر الیاس ستی نے کہا کہ ایچ آئی وی کے ساتھ ایک کلنک منسلک ہے اور متاثرین کے ساتھ امتیازی سلوک کی وجہ سے وہ بے روزگار ہوتے ہیں۔ ان لوگوں کو معاشی طور پر خودمختار بنانے کے لیے صرف انھیں ہی یہاں ملازمت دی جاتی ہے۔ چونکہ وہ خود اس صورتحال سے گزرے ہوتے ہیں اس لیے وہ دوسرے لوگوں کو درست طریقے سے ہدایات دینے کی اہلیت رکھتے ہیں۔‘‘

انھوں نے بتایا کہ انھیں صرف پاکستان نہیں بلکہ بیرون ملک سے بھی مہینے میں آٹھ دس کالز موصول ہوتی ہیں۔ بقول ان کے، ’’ہمیں بیرون ملکوں سے کالز آتی ہیں۔ اسے مزید آسان بنانے کے لیے ہم ایک منصوبے پر کام کر رہے ہیں، تاکہ کوئی بھی شخص مقامی کال کی طرح کسی بھی وقت بات کر سکے۔ لینڈلائن سے آنے والی کال مفت ہوتی ہے۔ ہم تمام موبائل کمپنیوں کے ساتھ رابطہ کر رہے ہیں، تاکہ ان کی کالز بھی مفت ہو جائیں۔‘‘


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.