ٹھہرنا بھی نہیں ممکن پلٹنا بھی نہیں ممکن

Poet: Dr.Mohammad Munir
By: Dr.Mohammad Munir, Abbottabad

ٹھہرنا بھی نہیں ممکن پلٹنا بھی نہیں ممکن
کہ ایسا وقت آیا ہے بدلنا بھی نہیں ممکن

پلا دو آخری قطرہ مجھے جام محبت کا
کہ اس کےبعد تو ساقی سنبھلنا بھی نہیں ممکن

محبت ہی حقیقت ہے محبت ہی ہے افسانہ
اکثھا بوجھ دونوں کا اٹھانا بھی نہیں ممکن

تیری الفت میں بہتر ہے میں جل کر راکھ ہو جاؤں
کہ اب اس آگ میں رہ کرسلگنا بھی ممکن

منیر اس کے رویوں سے خفا اپنا نہ دل کرنا
کہ حل ترک تعلق سےنکلنا بھی نہیں ممکن

Rate it:
12 Dec, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Dr.Mohammad Munir
Visit Other Poetries by Dr.Mohammad Munir »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

چوتھے شعر کے آحر میں بھی اور ممکن کے درمیان نہیں ہے

By: Dr.Mohammad Munir, Abbottabad on Dec, 18 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City