کیوں نہ دوست کوئی ایسا بنایا جائے

Poet: sanabintezaman
By: Sana, Abbotabad

کیوں نہ دوست کوئی ایسا بنایا جائے
جس کو ہر لفظ نہ سمجھایا جائے

زندگی بہت قلیل ہے کیوں کسی سے بیر رکھاجائے
ہر دن ہو جیسے آخری،ہر دن ایسے بتایا جائے

رکھیں کیوں کسی اور سے امید بہاراں
کیوں نہ خود کے اندر ہی خوشیوں کو تلاشاجائے

شکایتیں مانا کے بہت ہیں بہت سی بہت سے لوگوں سے
کیوں خود کو ہر بار اک سی اذیت سے گزارا جائے

قید میں ہو چاہے کوئی بھی دم گھٹتا ہے زمان
اب کیوں نہ اس بار جذبہ محبت کو بھی اڑایا جائے
 

Rate it:
22 Jun, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Sana
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City