مر رہا ھے کوئی ادھر غم ہجر کا مارا۔

Poet: Asad
By: Asad, mpk

عجب جلوے کی تیرے یار رعنائی ھے
جسکو دیکھو وہی حسن کا تیرے شیدائی ھے

جس کو دیکھو وہی تیرا دم بھرتا ھے
جس سے پوچھو وہی تیرا یار شیدائی ھے

ہم پر بھی ایک نظر پیار کی ڈال اپنے
کہ دل یہ اپنا بھی یار تیرا شیدائی ھے

مر رہا ھے کوئی ادھر غم ہجر کا مارا
اچھے طبیب ہو تم اچھی تیری مسیحائی ھے

کیوں نہیں آتے ادھر تم وقت فرصت کو
کہ انتظار کھٹن ھے جان پر بن آئی ھے

نام پر تیرے اسد اپنی جان فدا کرتا ھے۔۔۔
ہنوز یہ مت کہیو اب کہ اپنی نا آشنائی ھے

Rate it:
22 Jun, 2020

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Asad
Visit 368 Other Poetries by Asad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City