جانے والے سے رابطہ رہ جائے

Poet: تہذیب حافی By: ساجد ہمید, Quetta

جانے والے سے رابطہ رہ جائے
گھر کی دیوار پر دیا رہ جائے

اک نظر جو بھی دیکھ لے تجھ کو
وہ ترے خواب دیکھتا رہ جائے

اتنی گرہیں لگی ہیں اس دل پر
کوئی کھولے تو کھولتا رہ جائے

کوئی کمرے میں آگ تاپتا ہو
کوئی بارش میں بھیگتا رہ جائے

نیند ایسی کہ رات کم پڑ جائے
خواب ایسا کہ منہ کھلا رہ جائے

جھیل سیف الملوک پر جاؤں
اور کمرے میں کیمرہ رہ جائے

Rate it:
Views: 1822
27 Dec, 2021
Related Tags on Tahzeeb Hafi Poetry
Load More Tags
More Tahzeeb Hafi Poetry
Popular Poetries
View More Poetries
Famous Poets
View More Poets