خاموشی

(Saba Naz, )

اسے لگا میرے نئے دوست بن گئے
شاید اس لیے خفا سا تھا ، ہم پوچھتے ناراض ہو ؟ جواب ملتا نہیں
ہم بھی مذاق میں کہہ دیتے، دنیا سے چلے جاؤں گا پھر پتا چلے گئے ،
کبھی اس بات کو مذاق میں اڑا دیتا ،کبھی چپ ہوجاتا
اس کی خاموشی چھبتی تھی لیکن اظہار کرنے سے ڈرتے تھے ہم
تھوڑا پگلا سا ہے ، کچھ کم پگلے ہم بھی نہیں تھے
ہم نے بھی کہہ دیا اب جو روٹھے تم ، پھر کبھی نہ بولینگے ہم
اب قبر پر بیٹھا رو رہا ہے ، اور خاموش ہیں ہم
 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 341 Print Article Print
About the Author: Saba Naz

Read More Articles by Saba Naz: 10 Articles with 3389 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Very Nice
By: Waqas, karachi on Nov, 06 2018
Reply Reply
0 Like
Language: