دل کی بات

(FaZi dar, Mandibahauddin)
جان ہے تو جہان ہے احتیاط علاج سے بہتر ہے

*آج کے دور میں ذرا سی تکلیف کی صورت میں ھم فورآ دواؤں کا استعمال شروع کردیتے ہیں ۔ *گھریلو ٹوٹکے ، سنے سنائے سوشل میڈیا کے ذریعے حاصل کردہ نسخے ، گھر میں پہلے سے موجود دل کے مریضوں کے اپنی *دوائیں دوسروں کو استعمال کرنے کے مشورے ( مجھے بھی یہی علامات ھوتی تھیں ، اس دوا سے مجھے فائدہ ھوا تھا ، *آپ بھی یہی دوا آستعمال کر لیں ) غرض جو بھی دوا، پھکی ، چورن ، معجون ، ھاضمے *کا شربت ، میٹھی گولیاں ، کچھ بھی مل جائے ھم نے کھا لینا ہے اور اگر کچھ بھی نہ ملا تو *نزدیکی میڈیکل سٹور یا دواخانے جا کر علامات بتا کر دوائیں خرید کر کھا لیتے ہیں بنا *یہ جانے کہ ہمیں مسئلہ کیا ہے ، کیا واقعی کوئی بیماری ہے بھی یا نہیں ، بلکہ اب تو لیبارٹریز *میں جا کر خود ھی یا ٹیکنیشئن سے مشورہ کرکے خون کے مختلف ٹیسٹس بھی کروا لیتے *ہیں ۔ ایکس رے ، الٹرا ساؤنڈ ، ای سی جی ، اسٹریس ٹیسٹ اور ایکو کا مشورہ بھی دے دیتے *ہیں ۔بات یہاں ختم نہیں ہوتی کچھ لوگ تو انجیوگرافی کروانے بلکہ سینے میں درد کی صورت *میں اسٹینٹ ڈالنے کے لئے بھی مجبور کرتے ہیں ۔ سوچئے ھم کہاں جارہے ہیں ۔ سگریٹ نہیں *چھوڑیں گے ، الکحل نہیں چھوڑیں گے ، بازار کے مرغن کھانے نہیں چھوڑیں گے اور جب *ان کی وجہ سے سینے میں تیزابیت ھوگی تو مختلف گولیاں شربت کیپسول کھاتے رہیں گے ۔*

*عادات تبدیل نہیں کرنی ۔ کیا ھوا ایک اسٹینٹ پڑ گیا ؟ پھر تکلیف ھوئی تو دوبارہ انجیوپلاسٹی کروالیں گے۔*
*یاد رکھیں ! بغیر تشخیص کوئی دوا کبھی نہ کھائیں ، کسی کے مشورے پر عمل نہ کریں سوائے *مستند ڈاکٹروں کے ۔ کسی کے مشورے پر کسی قسم کا کوئی ٹیسٹ نہ کرائیں جب تک آپ کا مکمل طبی معائنہ نہ کر لیا *جائے ۔ ھماری بے شمار بیماریاں ایسی ہیں جن کے علاج کے لئے کسی دوائی کی ضرورت نہیں *ہوتی ذرا سی احتیاط سے یہ بیماریاں خود ھی ٹھیک ھو جاتی ہیں ۔*

*آخر میں ایک بات ! صحت کے لئے کوئی شارٹ کٹ نہیں ہے ۔ *صحتمند رہنے کے لئے اپنے نفس پر جبر کرنا پڑتا ہے ۔ اپنی* *غیرصحتمندانہ عادات کو ترک کرنا پڑتا ہے ۔۔*
*فیصلہ آپ پر*
 

Disclaimer: All information is provided here only for general health education. Please consult your health physician regarding any treatment of health issues.
Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 225 Print Article Print
About the Author: FaZi dar

Read More Articles by FaZi dar: 4 Articles with 671 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

agree with you
jazak Allah ho khair
By: Uzma, Lahore on Jun, 24 2019
Reply Reply
0 Like
Language: