حج ادائیگی کا آسان طریقہ

(Muhammad Aslam, )

ہمیشہ کی طرح اِس سال بھی اُن خوش نصیب افراد کے سعودی عرب جانے کا سلسلہ جاری وساری ہے جن کواﷲ تعالیٰ نے اپنے گھر آنے کی دعوت دیدی ہے یعنی میری مراد حجاجِ کرام سے ہے۔ اُن کیلئے حج ادائیگی کا آسان طریقہ کارمندرجہ ذیل ہے ۔

جس دن عرفات کے میدان جانا ہے اُس سے ایک دن قبل ایک بیگ تیار کرنا ہے جس میں مندرجہ ذیل اشیاء ہو نی چاہیے۔

دو عدد چادر احرام فالتو پاس رکھیں٭قرآن مجید (چھوٹا سائز)٭دو سوٹ کپڑے٭بند جوتا٭ ایک گرم چادر٭ ہوا بھرنے والا تکیہ٭ ہلکی جا ئے نماز٭ ـمناجات ِ مقبول بمعہ ترجمہ٭ ایک عددتسبیح٭ ایک ہفتے کی دوائی (اگر کھارہے ہوں)٭ پانی کی چھوٹی بوتل ،بسکٹ وغیرہ٭ فولڈنگ چٹائی٭ کنکریاں والی تھیلی٭ بند جوتا رکھنے والا تھیلہ٭
پلاسٹک کا کڑا:حج کے دنوں میں پلاسٹک کا کڑا ہا تھ میں پہنے رکھنا ہے۔
8ذوالحجہ پہلا دن:ایک کا م کرنا ہے( میدانِ عرفات جانا ہے)۔
1۔جانے سے 3-4گھنٹے پہلے احرام باندھ لیں۔
2۔اپنے کمرے ہی میں احرام باندھنا ہے۔
3۔دو رکعت نفل اورحج کی نیت (حج کی نیت کرتا ہوں اُسکوآسان فرما اور قبول فرما)اور تین دفعہ تلبیہ بلند آواز میں پڑھیں۔
4۔حج کا احرام باندھ کر اپنے مکتب /خیمہ میں ہی 5دن رہنا ہے ۔
5۔نماز کے لئے امام مقر رکرلیں ۔
6۔احرام کی حالت میں پاؤں ڈھانپ سکتے ہیں ۔چہرہ اور سر کھلا رہے۔
9ذوالحجہ دوسرا دن:دوکام کرنے ہیں۔
ا)وقوف عرفہ (فرض ہے)۔میدان ِعرفات میں ٹھہرنا /رُکنا۔
ب )وقوف مزدلفہ(واجب ہے)۔مزدلفہ میں ٹھہرنا /رُکنا۔
ا)وقوف عرفہ (فرض ہے):
1۔میدانِ عرفات میں زوال سے پہلے دو وقت کے کھانے کا انتظام کرلیں۔
2۔ قیام و مدت :زوال (ظہر ) سے سورج کے غروب ہونے تک۔
3۔اپنے خیمہ میں ہی نماز اوقات میں پڑھیں۔
4۔خیمہ کے باہر نکل کر کھلے آسمان کے نیچے کھڑے ہوکر دُعا مانگیں۔
5۔جن لوگوں نے دعا کے لئے آپ کو کہا ہے اُن کے لئے دُعا مانگیں ۔
6۔توبہ استغفار کرتے رہیں۔
7۔ ایام تشریق جو 23نمازوں پر مشتمل ہے کی پابندی ضروری ہے۔
8۔آج مغرب کی نماز عرفات کے میدان میں نہیں پڑھنی ہے۔
9۔مزدفہ کے لئے پیدل جانا ہے۔
ب )وقوف مزدلفہ(واجب ہے):
1۔وقتِ روانگی :سورج غروب ہونے کے بعد
2۔دونوں نمازیں( مغرب اور عشاء کے وقت) اکٹھی پڑھنی ہے(ایک اذان ایک اقامت میں عشاء کے وقت دونوں اکٹھی پڑھنی ہے ) اور ترتیبِ نمازیوں ہے۔3فرض مغرب ،4فرض عشاء،2سنت مغرب،2سنت عشاء،3وتر عشاء۔
3۔رات کو ہی مزدلفہ میں70کنکریاں تھیلی میں ڈالیں جومٹر کے دانے کے برابر اور کھجور کی گٹھلی سے چھوٹی ہو۔
4۔مزدلفہ میں فجر کی اذان مکہ کے ٹائم کے وقت (5منٹ تاخیر سے) دینی ہے۔
5۔مزدلفہ سے روانگی فجر کی نماز کے بعدواپس منیٰ تک پیدل جانا ہے ۔
6۔مزدلفہ میں رکنے کا وقت فجر کی اذان کے بعد سورج طلوع ہونے تک ہے۔
10ذوالحجہ تیسرا دن:تین کام کرنے ہیں۔
ا)رمی یعنی کنکریاں مارنا۔ (ب )قربانی۔ (ج)سر کے بال اتروانا۔
1۔پہلے خیمہ میں پہنچیں اور اپنے بیگ کو وہاں رکھ دیں اور پھر اُس کے بعد رمی کریں کیونکہ بیگ ساتھ لے کر جانے کی اجازت نہیں۔
2۔وقت ِ رمی ۔صبح سورج نکلنے کے بعد سورج غروب ہونے تک اور تمام رات کنکریاں ماری جاسکتی ہیں۔
3۔تیسرے بڑے شیطان کو سات کنکریاں مارنی ہیں۔
4۔کنکریاں مارنے کے وقت تلبیہ بند کردیں۔(ظہر کے وقت کوشش کریں)
ب) قربانی کا پتا کر لیں ا ور اگر قربانی کی تصدیق ہوجا ئے تو پھر۔
ج)سر کے بال اتروالیں اور احرام کھول لیں۔
طوافِ زیارت (فرضِ حج):
1۔ 10,11,12 ذوالحجہ فجر کے بعد تمام دن سورج غروب ہونے تک۔
2۔آج ہی مکہ مکرمہ روانہ ہوجائیں اپنے خرچ پر۔
3۔صرف گلے کا بیگ لے کر جائیں۔
4۔طوافِ زیارت (سات چکر۔طوافِ زیارت 2نفل۔سعی۔ استلام نمبر9)
5۔طوافِ زیارت کے بعدواپسی منیٰ ہوگی ۔
11ذوالحجہ چوتھا دن اور 12ذوالحجہ پانچواں دن: دونوں دن ایک ہی کام کرنے ہیں۔
1۔ظہر تک فارغ۔
2۔تین جگہ کنکریاں مارنی ہیں بہتر ہے کہ مغرب کے بعد جائیں۔
3۔وقتِ رمی۔ زوالِ ظہر سے سورج ’غروب ہونے تک اور تمام رات۔
4۔سات کنکریاں ہر جگہ مارنی ہیں بسم اﷲ ، اﷲ اکبر کہنا ہے۔
12ذوالحجہ کو ہی مکہ مکرمہ کے لئے روانہ ہو جائیں۔
الوداعی طواف(واجب):
1۔اپنے ملک واپس آنے سے چھ گھنٹے پہلے الوداعی طواف کریں جو واجب اور ضروری ہے۔
2۔عام کپڑوں میں ۔
3۔پہلے تین چکربغیر رمل کے(اکڑ کے نہیں چلنا)۔
4۔سات چکر واجب ِ طواف دونفل۔
5۔سعی نہیں کرنی۔

یہ تھا حج ادائیگی کا آسان طریقہ کار۔یہ کالم میں نے تین سال قبل مختلف تربیتی کورسزمیں شرکت کی مدد سے لکھا ہے کیونکہ 1437 ہجری (2016)میں،میں خود بھی اِن خوش نصیبوں میں شامل تھا جوپہلی بار حج کی سعادت حاصل کرنے گئے تھے ۔آخر میں، میں تمام قارئین کیلئے دعابھی کرنا چاہوں گا کہ اﷲ پاک سب کو حج کی سعادت جلد اور باربار نصیب فرمائے۔آمین
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Aslam

Read More Articles by Muhammad Aslam: 2 Articles with 683 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
26 Jul, 2019 Views: 419

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ