اردو زبان قومی اثاثہ

(sehrish jamal, lahore)
دنیا کا ہر ملک اپنی قومی زبان کا احترام کرتے ہوئے اسے سرکاری حیثیت دیتا ہے اور اس کا سارا تعلیمی نصاب اور سرکاری ریکارڈ بھی ان کی اپنی مادری و قومی زبان میں پرنٹ کیا جاتا ہے تاکہ شہریوں کو پڑھنے اور سمجھنے میں آسانی ہو۔ معروف لائبریریوں میں آج بھی دنیا کی قدیم ترین زبانوں پر مشتمل مجموعات موجود ہیں جنہیں اس دور کی قوموں نے اپنی شان سمجھتے ہوئے محفوظ کیا۔ تاہم بڑے افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ پاکستان میں ایسا نہیں۔ ہماری قومی زبان اردو اور سرکاری زبان انگریزی ہے جس سے ہماری غلامانہ سوچ کی عکاسی ہوتی ہے۔ دوسری طرف ملک میں دیگر کئی زبانیں بھی بولی جاتی ہیں جنہیں سرکاری سطح پر قبول نہیں کیا جاتا۔ پاکستان کا تعلیمی نصاب اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں پڑھایا جاتا ہے۔ سرکاری سطح پر قومی زبان کی پذیرائی نہ ہونے کے باعث ہماری قوم گومگوں کا شکار ہے۔ ایک خاص طبقہ اردو بولنے کو اچھا نہیں سمجھتا اور انگریزی بولنے میں فخر محسوس کرتا ہے۔ متوسط طبقہ اسے اپنی احساس محرومی سمجھتے ہوئے خاص طبقے کی پیروی کرتے ہوئے انگریزی بولنے کو ترجیح دیتا ہے اور دیکھا دیکھی یہ بیماری پھیلتی جا رہی ہے۔ 64برس گزرنےکے بعد بھی قومی زبان سرکاری سرپرستی سے محروم ہے۔جسکی وجہ ہم خود ہیں۔ہم نے انگریزی زبان کو ہی سرکاری زبان کا درجہ دے دیا ہے۔آج کسی کو اردو نہیں آتی وہ فخر سے بتاتا ہے جبکہ انگریزی نہ آنا شرمندگی کی بات سمجھی جاتی ہےحالانکہ اردوزبان عالمی زبان ہےاور یہ دنیا کی کئی جامعات میں پڑھائی جا رہی ہے۔جن میں چین،ترکی،جرمنی اور بھارت شامل ھیں۔اور کئی دوسرے ممالک میں اس پر کام ہو رہا ہےلیکن ہمارے ہاں اپنی قومی زبان کے فروغ کے لئے کوئی کام نہیں ہو رہا یہاں تک کہ مائیکروسوفٹ وئیر میں اردو ٹائپنگ اوراِن پیج پر بھی کسی اور ملک نے کام کیا ہےیہ بھی پاکستان میں نہیں بنایا گیا۔اردوٹائپنگ کا ایک سوفٹ وئیربھارت میں بنا ہے جوپاکستان کے لئے اردو میں ہے لیکن یہ انکی قومی زبان ہندی میں ہے۔ضرورت یہ ہے کہ ہم اپنی قومی زبان کو فروغ دیں تاکہ یہ زبان زندہ رہےاور ترقی کرےمگر پاکستان میں تو الٹی گنگا بہہ رہی ہے۔
سحرش جمال
ماس کمیونیکشن
لاہور گریژن یو نیورسٹی
Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 23925 Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: sehrish jamal

Read More Articles by sehrish jamal: 5 Articles with 25793 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Comments

آپ کی رائے
Great effort
By: M waqar, CHINIOT on May, 13 2020
Reply Reply
0 Like
سحرش آپ نے اچھی بات کہی ہمیں اردو پر توجہ دینی چاہیں ۔ہمارے حکمران اس بات کو سمجھے کاش
یا تو پر اردو کی بجائے انگریزی کو قومی زبان کا درجہ دیا جائے
By: faizan, peshawar on Apr, 18 2013
Reply Reply
2 Like
بہت اچھا لکھا ھے سحرش! مختصر اور مؤثر ۔ اردو زبان پر سب سے بڑا ظلم ھے اسے رومن میں لکھنا ۔ پھر تلفظ اور صحیح ہجوں پر بھی توجہ نہیں دی جاتی ۔ رومن میں کم از کم اتنا تو خیال رکھا جائے مگر اردو کا اس بری طرح سے حلیہ بگاڑا جاتا ھے کہ پڑھنا مشکل ہو جاتا ھے ۔ جو قوم اپنی قومی زبان کو اس کے اپنے رسم الخط میں لکھنے سے معذور ہو اور اس کا رومن خط میں ستیاناس مارنے میں کوئی شرمندگی یا توہین محسوس نہ کرتی ہو وہ ذہنی اور اخلاقی دونوں سطح پر دیوالیہ ھے اگر کسی بھی پڑھے لکھے پاکستانی کو اردو لکھنا نہیں آتا یا وہ اسے اپنی شان کے خلاف سمجھتا ھے یا اسے انگریزی میں لکھنا آسان لگتا ھے تو یہ کوئی فخر کی بات نہیں بلکہ نہایت ہی شرم کی بات ھےاور اس کی غلامانہ ذہنیت کا کھلا ثبوت
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas,USA on Apr, 17 2013
Reply Reply
3 Like
thanks
By: sehrish jamal, lahore on Apr, 18 2013
0 Like
Language:    
Urdu Zaban Qaumi Ahmiyat - Find latest Urdu articles & Columns at Hamariweb.com. Read Urdu Zaban Qaumi Ahmiyat and other miscellaneous Articles and Columns in Urdu & English. You can search this page as Urdu Zaban Qaumi Ahmiyat.