احسان انسانیت فرض یا قرض

(UA, Lahore)

اسلام و علیکم

کسی نے پوچھا یہ احسان عظیم کیا ہے برملا دل میں آیا وہ احسان جسے احسان نہ سمجھا جائے بلکہ اپنا فرض اور اپنے رب کا حکم سمجھ کر انسان کی بھلائی کے لئے وقت پڑنے پر ایسے کیا جائے کی جس پر کیا جائے اسے احساس نہ ہو کہ اس پر احسان کیا گیا ہے کوئی بھی انسان اپنی مرضی سے کسی کے لئے کچھ نہیں کرتا بلکہ اللہ اسے توفیق و اختیار عنایت فرماتا ہے تو ہی وہ کچھ کر پاتا ہے وہی بات کہ

سب کا داتا اللہ ہے
کس کا اپنا پلہ ہے

ہمارے پاس جو کچھ بھی ہے اﷲ کی عنایت ہے جسے اللہ کے حکم کے مطابق استعمال کرنا ہی رب کی طرف سے عطا کردہ نعمتوں کا صحیح حق ادا کرنا ہے اور اگر ہم ایسا نہیں کر پاتے تو ہم ناشکرے کہلائیں گے اور یہ سمجھنا کہ ہم نے کسی کے مشکل وقت میں کسی کا ساتھ دیا ہے تو ہم نے کسی پر احسان کر دیا بلکہ اللہ تعالٰی کا شکر ادا کرنا چاہئے کہ اس نے ہمیں اس قابل بنایا کہ ہم ایک دوسرے کے کام آ سکتے ہیں اور اس کام کو بھول جائیں جو ہم نے کیا ہے اس کا اشتہار یا نمائش نہ لگائیں ورنہ یہ احسان نہیں ظلم ہوگا اگر کسی کی دل آزاری کا باعث بنا تو لہذا جو بھی کریں رب کا حکم اور رب کا احسان سمجھ کر کریں اللہ ہم سب کو نیکی کی توفیق عنایت فرمائے آمین
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: uzma ahmad

Read More Articles by uzma ahmad: 32 Articles with 11784 views »
sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More
07 Aug, 2017 Views: 210

Comments

آپ کی رائے