’دنیا کے ذہین ترین بچے‘ نے یونیورسٹی تعلیم ترک کر دی

لوراں کو 'دنیا کا ذہین ترین بچہ‘ قرار دیا جاتا ہے لیکن یونیورسٹی کے ساتھ تنازعے کے بعد اس کا کم عمر ترین گریجویٹ بننے کا خواب پورا ہوتے ہوتے رہ گیا۔ لوراں کی دسویں سالگرہ چھبیس دسمبر کے روز ہے اور اسے اس سے پہلے گریجویشن مکمل کر لینا تھی۔ یوں لوراں دنیا کا کم عمر ترین گریجویٹ بھی بن جاتا۔

تاہم پیر کے روز نو دسمبر کو یونیورسٹی انتظامیہ نے لوراں اور اس کے والدین کو بتایا کہ جامعہ اس ڈیڈ لائن تک تمام امتحانات نہیں لے سکتی۔

یونیورسٹی کی جانب سے جاری کردہ بیان میں لکھا گیا، ''لوراں حد سے زیادہ قابل لڑکا ہے اور اس کی تعلیم غیر معمولی رفتار سے مکمل ہو رہی ہے۔ تاہم لوراں کی چھبیس دسمبر کے روز دسویں سالگرہ سے قبل مضامین اور ان کے امتحانات کی تعداد کو دیکھتے ہوئے یونیورسٹی نہیں سمجھتی کہ ایسا ممکن ہو سکے گا۔‘‘

ڈچ یونیورسٹی کے مطابق لوراں کے تمام امتحانات سن 2020 کے وسط تک مکمل کر لیے جائیں گے اور اس کے باوجود بھی لوراں کی ڈگری انتہائی کم وقت میں مکمل ہو جائے گی۔

'لوراں کا مستقبل روشن ہے‘

تاہم لوران کے والدین نے یونیورسٹی کے نئے ٹائم ٹیبل کو قبول کرنے سے انکار کرتے ہوئے فوری طور پر ڈچ یونیورسٹی میں لوراں کی پڑھائی کا سلسلہ ختم کر دینے کا فیصلہ کیا۔ ذہین بچے کے والد الیگزینڈر سیموں کا کہنا تھا، ''گزشت ہفتے تک سب کچھ ٹھیک چل رہا تھا لیکن اب اچانک یونیورسٹی نے چھ ماہ مدت بڑھا دی۔‘‘

لوراں ایسے ایجادات پر کام کرنا چاہتا ہے جو انسانیت کے لیے مفید ہوں

الیگزینڈر سیموں کا یہ بھی کہنا تھا کہ گریجویشن کی تاریخ کبھی بھی والدین کے لیے مسئلہ نہیں تھی لیکن انہیں یوں محسوس ہو رہا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے یہ اقدام لوراں کے والدین کے اس فیصلے کے ردِ عمل میں کیا ہے کہ گریجویشن کے بعد لوراں اپنی مزید پڑھائی کا سلسلہ کسی اور یونیورسٹی میں جاری رکھے گا۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اب لوراں کے مستقبل کے بارے میں نئی منصوبہ بندی کی جا چکی ہے۔ سیموں کا کہنا تھا، ''ہمیں آج ہی دو غیر ملکی یونیورسٹیوں سے آفرز ملی ہیں۔ ہمارے سامنے ایک روشن مستقبل ہے۔‘‘

لوراں کا عزم

دنیا کے ذہین ترین بچے لوراں نے چار برس کی عمر میں پڑھائی کا سلسلہ شروع کیا تھا اور محض ڈیڑھ برس میں اس نے پرائمری اسکول کی تعلیم مکمل کر لی تھی۔ سکول سے لے کر گریجویشن تک پہنچنے میں اسے محض چار برس لگے۔

نو سالہ لوراں امریکی موجد نکولا ٹیسلا کے نقش قدم پر چلتے ہوئے ایسی ایجادات پر کام کرنا چاہتا ہے جن کے ذریعے وہ انسانیت کی مدد کر سکے۔ لوراں کے مطابق وہ مصنوعی ذہانت پر مزید تحقیق کر کے انسانی اعضا بنانا چاہتا ہے۔

ش ح / ا ب ا (روئٹرز، اے ایف پی)

تاریخ11.12.2019ایک یا ایک سے زیادہ کلیدی الفاظ درج کریںذہین,قابل,تعلیم,کم عمر ترین,دنیا کا سب سےFeedback: فیڈ بیکپرنٹ کریںیہ صفحہ پرنٹ کریںپیرما لنکhttps://p.dw.com/p/3UdZv ’میرا باپ کون؟ کئی جرمن جانتے ہیں نہیں‘18.05.2019

گزشتہ چند دہائیوں میں جرمنی میں ہزاروں ایسے بچے پیدا ہوئے جن کے لیے نطفے نامعلوم افراد سے حاصل کیے گئے تھے۔ یہ عطیات جرمنی کے علاوہ دیگر ممالک سے حاصل کیے گئے، جن میں ڈنمارک قابل ذکر ہے۔

’طلاق نہیں دی تھی‘ اشتیاق بیگ کی ڈی ڈبلیو سے خصوصی بات چیت03.04.2019

نازیہ حسن کے مداح تین اپریل کو ان کی چون ویں سالگرہ منا رہے ہیں۔ اس موقع پر ان کے شوہر نے پہلی مرتبہ ڈی ڈبلیو سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ نازیہ حسن اور ان کے حوالے سے بہت سی غلط فہمیاں پھیلائی گئی تھیں۔

تاریخ11.12.2019ایک یا ایک سے زیادہ کلیدی الفاظ درج کریںذہین,قابل,تعلیم,کم عمر ترین,دنیا کا سب سےفیڈ بیکپرنٹ کریںیہ صفحہ پرنٹ کریںپیرما لنکhttps://p.dw.com/p/3UdZvاشتہار آپ کا مقامی ہیرو کون ہے ؟آپ کا مقامی ہیرو کون ہے ؟24.06.2015ہم ان لوگوں کے بارے میں جاننا چاہتے ہیں، جو پاکستانی معاشرے میں مثبت تبدیلی لا رہے ہیں۔

ڈی ڈبلیو کے ایڈیٹرز ہر صبح اپنی تازہ ترین خبریں اور چنیدہ رپورٹس اپنے پڑھنے والوں کو بھیجتے ہیں۔ آپ بھی یہاں کلک کر کے یہ نیوز لیٹر موصول کر سکتے ہیں۔

ڈوئچے ویلے نیوز لیٹر سروس میں خوش آمدید۔ براہ کرم یہاں رجسٹریشن کروائیں۔ 

عنواناتخبریںحالات حاضرہکھیلفن و ثقافتسائنس اور ماحولمعاشرہدستکسوالوجود زن تمام موضوعاتاسٹڈی اِن جرمنیمیڈیا سینٹرلائیوتمام میڈیا موادجرمن سیکھئےجرمن کورسجرمن XXLCommunity Dجرمن پڑھایئےڈی ڈبلیو کو جانیےرابطہموبائل© 2019 Deutsche Welle |ڈیٹا کا تحفظ |قانونی نوٹس |رابطہ| موبائل ورژن


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.