یوکرین کے وزیرِ اعظم اولیکسی ہونچارک نے استعفیٰ دے دیا

یوکرین کے وزیرِ اعظم اولیکسی ہونچارک نے استعفیٰ دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق یوکرین کے وزیرِ اعظم نے صدر ولادیمیر زیلینسک پر تنقید سے متعلق آڈیو لیک ہونے پر استعفیٰ پیش کر دیا ہے۔

مقامی خبررساں اداراے نے بتایا کہ  وزیرِ اعظم یوکرین نے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا ہے کہ انہوں نے وزیرِ اعظم کا عہدہ صدارتی پروگرام کے نفاذ کے لیے سنبھالا تھا۔

وزیرِ اعظم اولیکسی ہونچارک نے کہا کہ میں صدر یوکرین کو شفافیت اور شائستگی کے ماڈل کے طور پر دیکھتا ہوں۔

وزیرِ اعظم  نے کہا کے میں صدر یوکرین کا  احترام کرتا ہوں اور اس  احترام میں کسی بھی کمی کے شک سے بچنے اور ان پر اعتماد ظاہر کرنے کے لیے صدر یوکرین کو استعفیٰ پیش کر دیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روزپہلے یوکرین کے وزیر اعظم سے متعلق آڈیو لیک ہوئی تھی جس میں وہ صدر کو معاشیات کی سمجھ بوجھ رکھنے سے متعلق تنقید کا نشانہ بنا رہے تھے۔

اس سے قبل کینیڈا، یوکرین، سویڈن، افغانستان اور برطانیہ کے نمائندگان نے کے وزیر خارجہ نے ایران پر زور دیا تھا کہ وہ یوکرینی طیارہ حادثے سے متعلق جوابات دیں۔

لندن میں منعقد ہونے والے اجلاس میں ان تمام ممالک کے نمائندگان نے شرکت کی تھی جن کے شہری طیارہ حادثے میں ہلاک ہوئے تھے۔

اجلاس میں کینیڈا کے علاوہ یوکرین، سویڈن، افغانستان اور برطانیہ کے نمائندگان نے شرکت کی تھی۔

لندن میں طیارہ حادثے کی تحقیقات سے متعلق اجلاس میں شرکت کے بعد کینیڈا کے وزیر خارجہ کا کہنا تھا حادثہ میں ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ کو ایران کے طیارہ مار گرانے پر جواب چاہیے۔

کینیڈا کے فرانکوئس فلپ شیمپین اور برطانیہ کے ڈومینک رااب ، یوکرائن ، سویڈن اور افغانستان کے وزرائے خارجہ کے ساتھ ، ہر ایک نے لندن میں کینیڈا کے ہائی کمیشن میں متاثرین کی یاد منانے کے لئے شمع روشن کی ، اور اجلاس کے آغاز سے قبل عکاسی کے ایک لمحے کے لئے رک گیا تھا۔

یوکرین کے طیارے کو 2 میزائل مارے گئے،نئی ویڈیو سامنے آگئی

خیال رہے کہ کینیڈا کے وزیر خارجہ نے ایران پر زور دیا تھا کہ وہ یوکرینی طیارہ حادثے سے متعلق جوابات دیں۔

کینیڈا کے وزیر خارجہ فرانسوا فلپ نے جمعرات کو بیان دیا تھا کہ ایران سے جواب ملنے تک دنیا چین سے نہیں بیٹھے گی۔

یاد رہے کہ اجلاس کے اختتام پر پانچ نکات پر مبنی مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا تھا کہ جس کے تحت ایران کے ساتھ تحقیقات کے ہوالے سے تعاون کیا جائے گا۔

اعلامیے کے مطابق بین الاقوامی سرکاری افسران کو مکمل اور بغیر کسی رکاوٹ کے ایران کے اندر رسائی دی جائے اور واقعے کی مکمل، آزادانہ اور شفاف تحقیقات کی جائیں۔

اعلامیے میں مزید کہا گیا تھا کہ ایران طیارہ مار گرانے کی مکمل ذمہ داری قبول کرے اور ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ کی جانب جو ایران کا فرض بنتا ہے، ادا کرے۔ ایران سے نقصان کا ازالہ کرنے کا مطالبہ بھی کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ اجلاس میں شریک ممالک کے نمائندگان نے مطالبہ کیا تھا کہ ذمہ داران کے خلاف فوجداری نوعیت کی تفتیش کی جائے، اور بین الاقوامی معیار کے تحت عدالتی کارروائی کی جائے۔

واضح  رہے کہ یوکرین کا مسافر بردار طیارہ آٹھ جنوری کو ایران کے دارالحکومت تہران میں گر کر تباہ ہو گیا تھا، جس میں سوار تمام 176 مسافر ہلاک ہوگئے تھے۔ ہلاک ہونے والوں میں 57 کا تعلق کینیڈا سے تھا۔

ایران نے متعدد بار الزامات کو مسترد کرتے ہوئے 11 جنوری کو یوکرینی طیارہ مار گرانے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.