علم کوعزت دو!

(Abu Abdul Quddoos Muhammad Yahya, Karachi)
آج علم اور متعلقہ اشیاء کی ناقدری ہماری ذلت کا باعث ہے ۔ عزت و توقیر کرنے سے عزت ملے گی ۔

استاد تمہارے پاس فلاں کتاب ہے؟
طالبعلم : جی، گھر میں پڑی ہوئی ہے۔
استاد :کتاب کو پڑی ہوئی نہیں کہتے۔
طالبعلم: کیا فرق پڑتاہے ؟
استاد: بہت فرق پڑتاہے۔ الفاظ کا انتخاب ذہنی اورسماجی ترجیحات کامظہر ہے۔ قیمتی چیز کو تو کوئی نہیں کہتا گھر میں پڑی ہے۔نہ ہی وہ ادھرادھر گری پڑی ہوگی۔ کیا علم اتنا ہی بے توقیر ہے کہ وہ گرا پڑا کہلائے؟
اسلئے کتاب گھر میں پڑی ہوئی نہیں بلکہ رکھی ہوئی ہے!
آج علم اور متعلقہ اشیاء کی ناقدری ہماری ذلت کا باعث ہے ۔ عزت و توقیر کرنے سے عزت ملے گی ۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Abu Abdul Quddoos Muhammad Yahya

Read More Articles by Abu Abdul Quddoos Muhammad Yahya: 69 Articles with 87235 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
19 Aug, 2018 Views: 2623

Comments

آپ کی رائے
nys mind blowing
By: zaid, karachi on Aug, 24 2018
Reply Reply
0 Like