خاک کربلا کا مکالمہ

(Mona Shehzad, Calgary)

محرم شروع ہوا تو سوچ کا پرندہ اڑا، دماغ میں خیال آیا کہ اگر کربلا کی خاک کو اللہ تعالی زبان عطا کرتا تو وہ کیا کہتی۔خیال پیش نظر ہے ۔
ہوتی اگر قوت گویائی خاک کربلا کو عطا ،
تو وہ رو رو کر یزیدیوں سے یہ کہتی واشگاف،
لوگوں خدارا مجھ پر یہ ظلم بے پناہ نہ کرو۔۔۔۔
مجھے بے زباں کو خالق اور حبیب( صلی اللہ علیہ وسلم) کے سامنے رسوا نہ کرو۔۔۔۔
نہ مارو میرے معصوم اصغر کو تیر و نشتر سے،
نہ چڑھاو میرے امام کو یوں نیزے پر ۔۔۔۔
نہ چھینو سکینہ و زینب کی یہ پاک ردائیں ۔۔۔
نہ جلاو میرے پیاروں کے خیمے۔۔۔۔
کچھ تو بھرم رکھو آل رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا۔۔
بولتا فرات بھی کرلا کرلا کر ۔۔
ہائے کر دیا کیوں ظالموں نے شہید میرے عباس (رضی تعالی عنہ )کو ۔۔۔
ہوتا جو بس میں میرے ۔۔۔۔
میں بہتا ہی صرف آل رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے لئے سدا۔۔۔۔
مچائی مل کر زمین اور دریا نے پھر کچھ ایسی دہائی۔۔۔۔
میدان نے بھی پھر صرف خاک ہی خاک اڑائی ۔۔۔۔
تھے شجر وحضر سب ساکن ۔۔۔۔
ٹہر گیا تھا وقت بھی اس پل ساکن۔۔۔
فرشتے حیران تھے ۔۔۔
چلی تھی" آل رسول" کی سواری کربلا سے کچھ اس شان سے ۔۔۔
عباس(رضی تعالی عنہ ) کو حاصل تھا ابھی بھی علم برداری کا شرف ۔۔۔
علی اکبر (رضی تعالی عنہ )تھے منادی کرتے ۔۔۔۔
جنت کے بھی سب در وا تھے۔۔۔
شیر خدا اور خاتون جنت" منتظر خاص" تھے ۔۔۔
جب پہنچے میرے امام حسین (رضی تعالی عنہ ) معصوم علی اصغر (رضی تعالی عنہ )کو تھامے اپنی منزل پر ،
لگایا لپک کر سینے سے سرور کونین (صلی اللہ علیہ وسلم ) نے ۔۔۔
یوں میرے امام کا سفر تمام ہوا۔۔۔
رہتی دنیا تک" حسینیت "کا نام ہوا۔
مٹ گیا تھا نام یزید اسی روز،
کچھ ایسا قدرت کا انتقام ہوا۔
یوں" یوم عاشورہ" ہر دل خاص ہوا۔
Written by: Mona Shehzad.
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Mona Shehzad

Read More Articles by Mona Shehzad: 168 Articles with 178805 views »
I used to write with my maiden name during my student life. After marriage we came to Canada, I got occupied in making and bringing up of my family. .. View More
20 Sep, 2018 Views: 429

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ