محبت کالی چادر

(Shahid Hasrat, Multan)

”محبت کالی چادر“

کالی رات کا سناٹا جوبن پہ تھا کہ صائمہ دبے قدموں اٹھی اور پہلے سے تیار شدہ بیگ اٹھا کر گلی کے باہر چلی آئی جہاں اس کا محبوب بے چینی سے کھڑا اسی کا انتظار کر رہا تھا۔
”جلدی چلو۔۔وقت کم ہے۔۔کہیں کوئی دیکھ نہ لے۔“۔ثاقب بے تابی سے بولا تو صائمہ کے بڑھتے قدم رک گئے اور بیگ ہاتھ سے چھوٹ کر زمین پہ جا گرا۔۔۔اس کی نگاہوں میں اپنی چھوٹی بہن کا سراپا گھومنے لگا جس کی کل منگنی تھی۔۔۔دوسرے ہی لمحے اس نے نفی میں سر ہلایا اور بیگ اٹھائے واپس گھر میں داخل ہوگئی۔۔

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 239 Print Article Print
About the Author: Shahid Hasrat

Read More Articles by Shahid Hasrat: 17 Articles with 9293 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language: