صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا دورہ ٹی ایچ کیو کہوٹہ و کلرسیداں

(Muhammad Ashfaq, Rawalpindi)

پنجاب حکومت صحت کے شعبہ میں انقلابی اقدامات اٹھا رہی ہے جن میں پنجاب بھر کے ضلعی و تحصیل سطح پر قائم ہسپتالوں کی اپ گریڈیشن ان میں جدید مشینری کی فراہمی ادویات کی قلت کو دور کرنا اسپیشلسٹ ڈاکٹرز کی تعیناتی ضلعی سطح پر ہسپتالوں میں مریضوں کو کھانے کے فراہمی جیسے اقدامات شامل ہیں خاص طور پر قابل زکر بات یہ ہے کہ ہسپتالوں میں مریضوں کو دی جانے والی سہولیات کو ایک خاص نظام کے تحت مانیٹر بھی کیا جا رہا ہے جو کہ ایک بہت ہی خوش آئند اور احسن اقدام ہے اور اب تو پنجاب حکومت کی انقلابی پالیسیوں کی بدولت پنجاب بھر کے بنیادی مراکز صحت اور دیہی علاقوں میں قائم مراکز صحت میں بھی مریضوں بہت ساری طبی سہولیات عمل میں لائی جا چکی ہیں جن سے غریب مریض مستفید ہو رہے ہیں دیہی علاقوں میں زچہ بچہ کی سہولت کیلیئے 1134ایمبولینس سروس کی قیام پنجاب حکومے کا نہایت ہی احسن اقدام ہے صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے جب سے وزارت صحت کا قلمدان سنبھالا ہے یہ شعبہ دن بدن ترقی کی راہ پر گامزن ہے انہوں نے دن رات محنت کر کے شعبہ صحت کو اس قابل بنا دیا ہے کہ اب غریبوں کے ساتھ ساتھ امیر لوگ بھی سرکاری ہسپتالوں سے اپنے علاج کو ترجیح دے رہے ہیں پہلے لوگ یہ سمجھتے تھے کہ سرکاری ہسپتال صرف غریب عوام کے علاج و معالجہ کیلیئے بنائے گئے ہیں لیکن پنجاب حکومت نے اس شعبہ میں میں اتنی جدت پیدا کر دی ہے کہ اب امیر لوگ بھی سرکاری ہسپتالوں کا رخ کرنے پر مجبور ہو چکے ہیں صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد زیادہ عمر ہونے کے باوجود جوانوں کی طرح دوڑ دھوپ کر رہی ہیں وہ اس حوالے سے کبھی پنجاب کے ایک کونے میں اور کبھی دوسرے کونے میں پہنچی ہوئی ہوتی ہیں انہوں نے صحت کے شعبہ کو اس قابل بنانے کا عزم کر رکھا ہے کہ پنجاب کے دیگر شعبوں کے وزراء ان کی مثال لے سکیں ان کی طرف سے ہسپتالوں کے اچانک دوروں نے اس اس محکمہ کو مزید ہائی الرٹ کر دیا ہے اور کوئی پتہ نہیں چلتا ہے کہ ڈاکٹر صاحبہ کی صبح نہ جانے پنجاب کے کس دور دراز علاقے کے سرکاری ہسپتال میں ہو جائے ڈاکٹر یاسمین راشد کی طرف سے صحت کے شعبے میں اتنی زیادہ دلچسپی سے پنجاب حکومت کی صحت مندانہ پالیسیوں کو فروغ حاصل ہو رہا ہے اور یہ شعبہ آئے روز بہتری کی جانب بڑھ رہا ہے وہ پنجاب کے دور افتادہ علاقوں میں سرکاری ہسپتالوں کے دورے کر رہی ہیں جن کا مقصد سرکاری ہسپتالوں کی حالت کو مزید بہتر بنانا ہے انہوں نے بدھ کے روز ٹی ایچ کیو کہوٹہ اور کلرسیداں کا دورہ کیا ہے یہ دورہ انہوں نے ایم این اے حلقہ این اے 57 صداقت عباسی اور ایم پی اے راجہ صغیر احمد کی خصوصی دعوت پر کیا ہے صداقت علی عباسی اور ایم پی اے راجہ صغیر احمد کی طرف سے صوبائی وزیر صحت کو اپنے حلقے کے ہسپتالوں کیدورے کی دعوت دینے سے جہاں ایک بات بہت واضح ہو گئی ہے کہ واقع ہی اپنے حلقے کے عوام کیلیئے درد رکھتے ہیں وہاں یہ بھی ثابت ہو گیا ہے کہ دونوں منتخب نمائندے اپنے حلقہ کے عوام کو صحت کے حوالے سے بھی مزید سہولیات فراہم کرنے کیلیئے اپنے تمام تر وسائل اور زرائع کو بھر پور طریقے سے استمعال میں لا رہے ہیں ٹی ایچ کیو کہوٹہ کے دورے کے موقعے پر انہوں نے ہسپتال کو ساٹھ بستر سے بڑھا کر سو بستر پر مشتمعل کر دیا ہے کہوٹہ میں ایک ماہ کے اندر اندر 1122 سروس کی فراہمی کہوٹہ میں ایک ماہ کے اندر ہیلتھ کارڈز کی فراہمی اور اس کے ساتھ ساتھ ہسپتال میں ہر قسم کی ادویات اور دیگر ضروری سامان مہیا کرنے کا بھی اعلان کیا ہے اور ہی انہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ یہ اعلانات صرف زبانی نہیں بلکہ ان پر فوری طور پر عملدرآمدہو گا اس کے بعد انہوں نے ٹی ایچ کیو کلرسیداں کا دورہ کیا ہے جہاں پر پاکستان تحریک انصاف کے مقامی رہنماؤں نے ان کا نہایت ہی پرتپاک طریقے سے استقبال کیا ہے اس موقع پر پی ٹی آئی کے تمام عہدیدار اور کارکن متحد دکھائی دیئے ہیں پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں کے جوش و ولولے کی وجہ سے ان کا یہ دورہ ایک جلسہ کی صورت اختیار کر گیا ہے پاکستان تحریک انصاف تحصیل کلرسیداں کے صدر اور محکمہ صحت کے فوکل پرسن راجہ ساجد جاوید نے خطبہ استقبالیہ میں ہسپتال میں موجود بیدز میں اضافہ لیبر و سکوپنگ مشین الٹرا سونڈز مشینوں کو چلانے کیلیئے کوالیفائیڈ عملہ ایکسرے ڈیپارٹمنٹ میں عملہ کی فراہمی بنیادی مرکز صحت بشندوٹ سر سوبہ شاہ اور سموٹ کی عمارتوں کو نئے سرے سے تعمیر کرنے کا مطالبہ کیا ہے انہوں نے کہا کہ یو سی غزن آباد میں ابھی تک بنیادی مرکز صحت کا وجود ہی نہیں ہے لہذا وہاں پر ہسپتال تعمیر کیا جائے نیز ٹی ایچ کیو کلرسیداں میں صحت کے ھوالے سے تمام کمی پوری کی جائے راجہ ساجد جاوید نے اپنے علاقے کیلیئے صحت کے حوالے سے سہولیات کی فراہمی کا نہایت ہی شاندار الفاظ میں مطالبہ کیا ہے انہوں نے تحصیل کلرسیداں کی صدارت کا حق ادا کر دیا ہے صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ مریضوں کو علاج و معالجہ کی بہتر سے بہتر سہولیات فراہم کرنا ان کی ترجیحات میں شامل ہے جس سے ہم کسی بھی صورت غافل نہیں ہیں قائد اعظم کی خواہش کے مطابق بہترین پاکستان بنانے میں جنگی بنیادوں پر کا م کر رہے ہیں مئی میں ضلع راولپنڈی میں 2لاکھ 88ہزار غریب خاندانوں کو صحت کاردز فراہم کیئے جائیں گئے اور ایسے معزور افراد جن کے پاس معزوری سرٹیفیکیٹس موجود ہیں ان کو الگ سے صحت کارڈز جاری کیئے جائیں گئے انہوں نے کہا کہ وزارت صحت کا چارج چیلینج سمجھ کر قبول کیا ہے عمران خان اپنے عوام کیلیئے درد دل رکھتے ہیں یہی وجہ ہے کہ انہوں نے شوکت کانم اور نمل یونیؤرسٹی جیسے ادارے قائم کیئے ہیں ٹی ایچ کیو کلرسیداں میں بہترین طبی سہولیات فراہم کی جائیں گی اور اس ھوالے سے تمام مطالبات کی منظوری دی جائے گی صوبائی وزیر صحت کے دورہ کے حوالے سے ایم این اے صداقت علی عباسی اور ایم پی اے راجہ صغیر احمد کی کاوشیں لائق تحسین ہیں اور دونوں نمائندے اس حوالے سے کامیاب رہے ہیں ایک صوبائی وزیر کو اپنے حلقے کا دورہ کروانے کا مقصد یہی تھا کہ وہ کسی بھی حوالے سے اپنے حلقہ کے عوام کو کوئی سہولت فراہم کروا سکیں تو وہ اپنے اس مقصد میں کامیاب ہی ہوئے ہیں اس موقع پر ایم این اے صداقت علی عباسی ایم پی راجہ صغیر احمد ایم پی اے چوھدری جاوید کوثر اسسٹنٹ کمشنر کلرسیداں عنبر گیلانی،صدر پی ٹی آئی راولپنڈی ڈویژن ہارون کمال ہاشمی، ملک سہیل اشرف، میڈم نبیلہ انعام، ڈی ڈی ایچ او کلرسیداں ڈاکٹر عابد شاہ عثمان شاہد، عاقب علی سمیت محکمہ صحت راولپنڈی کے اعلی افسران بھی موجود تھے اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف کلرسیداں کے مقامی رہنماؤں کی کاوشیں بھی قابل تعریف رہی ہیں اجنہوں نے وزیر صحت کے دورہ کے موقع پر بہترین انتظامات کر کے اپنی پارٹی کو تقویت دی ہے ایک اور اہم بات جس کا زکر کرنا بہت ضروری ہے کہ اس موقع پر چند افراد نے اس سارے معاملے کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کی ہے احتجاج کرنا ہر کسی کا حق ہے اگر ان کو کوئی شکایت تھی تو اس کیلیئے دیگر پلیٹ فارم بھی موجود ہیں ان سے بھی کام لیا جا سکتا تھا لیکن دوسروں کے گریبانوں تک نوبت چلی جائے تو اس کو احتجاج نہیں بلکہ کوئی زاتی رنجش ہی تصور کیا جاتا ہے میرے خیال میں اگر کوئی شکایت تھی تو اس کیلیئے صرف ایم ایس کلرسیداں ہسپتال ہی کافی تھے میں ان کو زاتی طور پر جانتا ہوں اگر یہی شکایت ایم ایس ڈاکٹر ہمایوں انور سے کی جاتی تو میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ وہ ایسے آفیسر ہیں جو تمام معاملات سے بخوبی نمٹنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور شکایت کنندہ کو ہر صورت مطمئن کرتے ہیں اور قصور واروں کو سزا بھی دیتے ہیں لیکن اس موقع پر شکایت کنندوں نے جو طریقہ اختیار ر کیا ہے اس پر صرف افسوس ہی کیا جا سکتا ہے میں داد دیتا ہوں صداقت علی عباسی راجہ صغیر احمد اور جاوید کوثر کو جنہوں نے خود اپنی توہین برداشت کر لی ہے لیکن صوبائی وزیر صحت کو اس تمام معاملے سے بچائے رکھا ہے اس واقعے سے کسی کا بھی کچھ نہیں بگڑا ہے صرف ہماری اپنی ہی بدنامی ہوئی ہے سمجھداری اور دانشوری کی بات یہی ہے کہ صوبائی وزیر صحت کا یہ دورہ ہر لحاظ سے کامیاب رہا ہے اس دورے کہوٹہ اور کلرسیداں کے عوام کو کچھ نہ کچھ ضرور حاصل ہوا ہے جس کا تمام تر سہرا پاکستان تحریک انصاف کی مقامی قیادت کو جاتا ہے
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Ashfaq

Read More Articles by Muhammad Ashfaq: 150 Articles with 49791 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
15 Apr, 2019 Views: 479

Comments

آپ کی رائے